اگلے سال مہنگائی کی شرح 5فیصد تک لائی جائیگی: وزات خزانہ

  اگلے سال مہنگائی کی شرح 5فیصد تک لائی جائیگی: وزات خزانہ

  



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزارت خزانہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ ملک میں سرمایہ کاروں کا اعتماد بڑھ رہا ہے۔ پاکستان میں مائیکرو اکنامک سٹیبلٹی آ رہی ہے۔ مالی سال 2020ء میں مہنگائی کی شرح 5 فیصد تک لائی جائے گی۔ترجمان وزارت خزانہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ نیا پاکستان ہاؤَسنگ سکیم کیلئے 20 سے 30 ارب روپے کی اضافی رقم جاری کی جائے گی جبکہ برآمدکنندگان کو ایکسپورٹ پیکیج کے تحت 200 ارب روپے کی امداد فراہم کی جائے گی۔ پاور سیکٹر مالی سال 2020ء میں 250 ارب روپے کے سکوک بانڈز جاری کرے گا۔انہوں نے بتایا کہ مالی سال 2019ء جولائی میں ماہانہ گردشی قرضہ 38 ارب روپے تھا جو کم ہو کر 10 ارب روپے ماہانہ ہو رہا ہے۔ مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں جاری کھاتوں کے خساروں میں 2 اعشاریہ 4 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی۔ اس کے علاوہ بہتر پالیسیوں کی وجہ سے ٹیکس وصولی دوگنی ہوئی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ملک میں امپورٹس میں 23 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی جس سے ملک میں ایکسپورٹ میں اضافہ ہوگا۔وزارت خزانہ نے کہا ہے کہ رواں مالی سال کے دوران پاکستان کی معیشت میں استحکام اور فیصلہ کن پالیسوں کی وجہ سے کاروبار کرنے کے ماحول میں بہتر ی کو  آئی ایم ایف نے تسلیم کیا ہے۔ آئی ایم ایف سے پروگرام کے تحت مجموعی طور پر ایک ارب 45کروڑ ڈالر موصول ہو چکے ہیں۔  رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں اسٹیٹ بینک سے بجٹ سپورٹ کے طور پر کوئی قرض نہیں لیا گیا، زرمبادلہ کے ذخائر اور نیٹ مقامی اثاثہ جات کے تمام اہداف حاصل کیے گئے۔

وزرات خزانہ 

مزید : صفحہ اول