سال 2019کے دوران ٹریفک پولیس کی کارکردگی انتہائی مایوس کن رہی 

سال 2019کے دوران ٹریفک پولیس کی کارکردگی انتہائی مایوس کن رہی 

  



کراچی(کرائم رپورٹر) سال2019 کے دوران ٹریفک پولیس کی کارکردگی انتہائی مایوس کن رہی، ماضی کے مقابلے میں بھاری چالان کیے جانے کے باوجود بے ہنگم ٹریفک کا مسئلہ حل نہ کیاجاسکا۔رواں سال 77 کروڑ 33 لاکھ سے زائد کے بھاری چالان کیے گئے لیکن کراچی کی سڑکوں پر چلنے والی بے ہنگم ٹریفک میں تبدیلی نہیں لائی جا سکی۔رواں سال سب سے زیادہ چالان ون وے اور ہیلمٹ قانون کی خلاف ورزی پر کیے گئے۔سال 2019 میں ٹریفک پولیس کی تمام تر توجہ غریب عوام کے چالان کاٹنے پر مرکوز رہی،ماہرین کے مطابق ٹریفک پولیس اگر اتنی ہی کوشش ٹریفک قوانین کے عمل درآمد پر کرتی تو آج ٹریفک کی صورت حال مختلف ہوتی۔ایک طرف ٹریفک پولیس کی ساری توجہ سرکاری خزانے کو بھرنے پر مرکوز رہی، دوسری طرف رواں سال مختلف ٹریفک حادثات میں 850 سے زائد افراد جاں بحق جب کہ 15 ہزار سے زائد زخمی ہوئے۔ڈی آئی جی ٹریفک جاوید مہرکے مطابق رواں سال 31 لاکھ کے چالان ہوئے، ٹریفک فائن کی مد میں پورے سال 75 کروڑ سے زائد کی رقم سرکاری خزانے میں جمع کرائی گئی۔ ایدھی فاؤنڈیشن کے احمد ایدھی کے مطابق رواں سال ہر ماہ تقریبا 12 سو افراد زخمی ہوئے، جس کا مطلب ہے کہ پورے سال میں تقریبآ پندرہ ہزار لوگ زخمی ہوئے۔شہریوں نے ٹریفک پولیس کی جانب سے مختلف قسم کے چالان اور غریب طبقے کو نشانہ بنانے پر شدید رد عمل کا اظہار کیا، شہریوں نے کہاکہ بڑی گاڑیوں کو ٹریفک پولیس نہیں روکتی، یہ ہم برسوں سے اس شہر میں دیکھتے آ رہے ہیں، جب کہ غریبوں کو روکا جاتا ہے، ٹریفک اہل کار چابیاں نکال لیتے ہیں اور بد تمیزی کی جاتی ہے

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر