وردی میں ملبوس بھتہ خوروں کے خلاف کاروائی کرنے اور عام شہری کو انصاف دلانے کا مطالبہ

وردی میں ملبوس بھتہ خوروں کے خلاف کاروائی کرنے اور عام شہری کو انصاف دلانے ...

  



چارسدہ(بیور و رپورٹ) پاکستان تحریک انصاف کے ضلعی راہنماء ناصر خان نے حکومت سے فورسز کی وردی میں ملبوس بھتہ خوروں کے خلاف کاروائی کرنے اور عام شہری کو انصاف دلانے کا مطالبہ کیا ہے۔ پولیس سٹیشن تنگی میں نامعلوم فورسز کے خلاف اغواء برائے تاوان کا مقدمہ درج کیا ہے جس پر تاحال کوئی کاروائی نہ ہو سکی۔اس حوالے سے چارسدہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے ضلعی راہنماء ناصر خان نے کہا کہ اس کا دوست مظفر خان 24نومبر کو حسب معمول اس کے پیڑول پمپ پر موجود تھا کہ اس دوران فورسز کی وردی میں ملبوس کچھ لوگ آئے اور ان کے دوست کو زبردستی سرکاری موبائل میں بٹھا کر نامعلوم مقام منتقل کیا جس کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی موجود ہے جو ہر فورم پر پیش کئے جا سکتے ہیں۔ایک ہفتہ تک حسب بے جا میں رکھنے کے بعد نامعلوم افراد کی جانب سے فون کالز موصول ہونا شروع ہوئی جس میں ایک کروڑ روپے تاوان دینے کا مطالبہ کیا گیا جبکہ تاوان نہ دینے کی صورت میں سنگین نتائج بھگتنے کی دھمکیاں دیتے رہے۔جس کے خلاف ہم نے پولیس سٹیشن تنگی میں نامعلوم فورسز کے خلاف بھتہ لینے کی ایف آئی آر درج کی ہے جس پرتاحال کسی قسم کی کاروائی نہیں ہوئی ہے۔ اس حوالے سے ان کا مزید کہنا تھا کہ واقعہ کے ایک ہفتہ کے بعد محکمہ کاونٹر ٹیرارزم ڈیپارٹنمنٹ کے اہلکاروں نے مظفر خان کی موجودگی کا انکشاف کیا اور اسکے کے خلاف ایک کلو چرس کے برآمدگی اور غیر قانونی پستول رکھنے کا مقدمہ درج کرکے عدالت میں پیش کیا جہاں سے مظفر خان کو ضمانت پر رہائی مل گئی لیکن رہائی کے فوری بعد میں محکمہ کے بعض اہلکار مظفر خان پر میڈیا میں نہ جانے اور تنگی پولیس سٹیشن سے ایف آئی آر واپس لینے کے لئے دباؤ ڈالتے رہے۔اس حوالے سے انہوں نے مزید کہا کہ وہ ایک پرامن شہری ہے اور تمام ریاستی اور حکومتی اداروں کی قدر کرتے ہیں لیکن اس کے باوجود بھی ان اداروں میں ایسے لوگ موجود ہیں جو اداروں کے ساکھ سمیت حکومت کو نقصان پہنچا رہے ہیں اس لئے وزیرا عظم عمران خان،آرمی چیف،چیف جسٹس آف پاکستان اور آئی جی پولیس سمیت دیگر متعلقہ حکام سے مذکورہ واقعہ کا نوٹس لینے اور ملوث اہلکاروں کے خلاف کاروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر