آدمی نے پتھر سنبھال کر رکھا کہ شاید اس میں سونا ہو، لیکن دراصل یہ کیا ہے؟ حقیقت سامنے آئی تو سونے سے بھی زیادہ قیمتی

آدمی نے پتھر سنبھال کر رکھا کہ شاید اس میں سونا ہو، لیکن دراصل یہ کیا ہے؟ ...
آدمی نے پتھر سنبھال کر رکھا کہ شاید اس میں سونا ہو، لیکن دراصل یہ کیا ہے؟ حقیقت سامنے آئی تو سونے سے بھی زیادہ قیمتی

  



کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک) آسٹریلیا میں ایک شخص کو سالوں قبل ایک عجیب و غریب پتھر ملا اور اس نے اس امید میں آج تک سنبھال کر رکھا کہ شاید اس میں سونا ہو لیکن اب جا کر حقیقت کھلی ہے کہ یہ پتھر تو سونے سے بھی کہیں زیادہ قیمتی ہے۔ ویب سائٹ سائنس الرٹ کے مطابق اس شخص کا نام ڈیوڈ ہول ہے جو آسٹریلوی شہر میلبرن کے قریبی علاقے میری برا ریجنل پارک کا رہائشی ہے۔ وہ ایک میٹل ڈی ٹیکٹر کے ذریعے قیمتی دھاتیں تلاش کر رہا تھا جب اسے یہ پتھر ملا۔ یہ سرخ اور زرد رنگت کا بھاری پتھر تھا جسے دیکھ کر شائبہ ہوتا تھا کہ اس میں سونے کی ملاوٹ ہو گی۔

ڈیوڈ نے اس پتھر کو توڑنے کی بہتیری کوشش کی تاکہ معلوم کر سکے کہ اس کے اندر سونا ہے یا نہیں۔ اس نے آری، گراینڈر، ڈرل مشین، ہتھوڑے حتیٰ کہ تیزاب کا بھی استعمال کیا لیکن یہ پتھر کبھی نہ ٹوٹ سکا۔ گزشتہ دنوں ڈیوڈ اس پتھر کو میلبرن میوزیم لے گیا جہاں ماہرین نے ہیرے کاٹنے والے آلے سے اس کا ایک ٹکڑا الگ کیا اوراس کا تجزیہ کرکے بتایا کہ یہ ایک انتہائی نایاب شہاب ثاقب ہے جس کی قیمت لاکھوں ڈالر تک جا سکتی ہے۔

ماہرین نے بتایا کہ ”17کلوگرام وزنی یہ شہاب ثاقب 4ارب 60کروڑسال قدیم ہے۔اس شہاب ثاقب پر تحقیق سے ہم ممکنہ طور پر جان سکتے ہیں کہ یہ کائنات کیسے وجود میں آئی اور ہماری زمین اور ہمارا نظام شمسی کیسے بنا۔اس شہاب ثاقب پر موجود کاربن سے پتا چلا ہے کہ اسے زمین پر گرے 100سال سے 1ہزار سال کا عرصہ ہو چکا ہے۔ اس نوعیت کے چند ہی نایاب شہاب ثاقب دنیا میں موجود ہیں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس