نور مقدم قتل، ملزم کی امریکی شہریت ریکارڈ پر لانے کی درخواست مسترد

نور مقدم قتل، ملزم کی امریکی شہریت ریکارڈ پر لانے کی درخواست مسترد

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


اسلام آباد(این این آئی)اسلام آباد ہائی کورٹ نے نور مقدم قتل کیس میں مرکزی ملزم کی جانب سے امریکی شہریت کو ریکارڈ کا حصہ بنانے کی درخواست مسترد کردی ۔جمعرات کوچیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ عامر فاروق کی سربراہی میں2رکنی بینچ نے رجسٹرار آفس کے اعتراضات کےساتھ نور مقدم قتل کیس کے مرکزی ملزم ظاہر جعفر کی درخواست کی سماعت کی جس میں غیر ملکی شہریت کی دستاویزات ریکارڈ پر رکھنے کی استدعا کی گئی تھی۔عدالت نے ظاہر جعفر کے وکیل کے دلائل سننے کے بعد بھی رجسٹرار آفس کے اعتراضات برقرار رکھے، جس میں کہا گیا تھا کہ فیصلہ محفوظ ہو چکا ہے، اب کوئی نئی درخواست نہیں سنی جا سکتی۔ دوران سماعت مرکزی ملزم ظاہر جعفر کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ یہ بات ریکارڈ پر آنی چاہیے کہ ظاہر جعفر غیر ملکی شہریت رکھتا ہے۔چیف جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دئیے کہ غیر ملکی شہری ہونا ریکارڈ پر آبھی جائے تو کیا فرق پڑے گا؟،اگر ظاہر جعفر امریکی شہری ہے تو کیا ہوا؟ کیا آپ امریکی شہری بتا کر کوئی رعایت لینا چاہتے ہیں؟کیا آپ چاہتے ہیں کوئی بھی باہر سے آئے اور بندہ مار کر چلا جائے؟، کیا آپ پاکستان کو ایسے لوگوں کی جنت بنانا چاہتے ہیں؟۔چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ پہلے بھی واضح کر چکے ہیں کہ اس کیس میں یہاں پاکستان کا قانون چلے گا۔ عدالت نے امریکی شہریت کو ریکارڈ کا حصہ بنانے کی درخواست مسترد کردی۔
نور مقدم قتل

مزید :

صفحہ آخر -