ایم اے جوہرٹاؤن میں کروڑوں روپے کی خوردبرد کا انکشاف

ایم اے جوہرٹاؤن میں کروڑوں روپے کی خوردبرد کا انکشاف

 لاہور(اپنے خبر نگار سے)لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی سکیم ایم اے جوہر ٹاؤن میں کروڑوں روپے کی پراپرٹی میں خوردبرد کا انکشاف موضع نیاز بیگ کے عبدالوحیدکی 6 کنال اراضی ا یل ڈی اے اور ریونیوکے اہلکاروں کی ملی بھگت سے پلاٹ لگواکر کسی دوسری پارٹی کے ہاتھوں بیچ ڈالے جبکہ اصل مالکان کو پتہ ہی نہیں چلا تفصیلات کے مطابق ایل ڈی اے کی سکیم محمد علی جوہر ٹاؤن میں موضع نیاز بیگ میں واقع عبدالوحید ولد جان محمد کی 6کنال اراضی جنکے خسرہ جات 12879- 12880-12877-12888-12889-12900-12899-13511کومرزا اعجاز بیگ والدمرزاحبیب الرحماٰن نے بوگس مختارنامہ تیار کر کے ایل ڈی اے کے ملازمین کی ملی بھگت سے پلاٹ نمبر 7بلاک جے تھری ایک کنال پلاٹ نمبر 12بلاک جے بارہ مرلہ اورپلاٹ نمبر609بلاک جی فور پانچ مرلہ لگوا کربیچ دئیے ایل ڈی اے افسران کی عقلمندی دیکھئے کہ پلاٹوں کی ایلوکیشن 10-12-1992کو ہوئی جبکہ مختارنامہ کے رجسٹر ہونے کی تاریخ 12-1-1992ہے جس میں پلاٹوں کے نمبر درج تھے حالانکہ پلاٹوں کے نمبروں کا پتہ ہی ایلوکیشن کے بعد چلتا ہے مگر ایل ڈی اے نے بغیر کسی تصدیق کے مختار نامہ فائل نمبر jt nb 4642میں لگادیا جس کی کوئی تصدیق نہیں کی گئی جبکہ اصل مالکان ایگزیمپشن کے لئے در در کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں ۔عبدالوحید کے بیٹے نے بتایا کہ جعلی تیارکیاجانیوالے مختار عام جو کہ مرزا اعجاز کے نام بنایا گیا ہے۔اس کے شناخت کنندہ اس کا باپ مرزا حبیب الرحمٰن جبکہ گواہان میں ایک اس کا بھی مرزا ریاض اور دوسرا ان کا بہنوئی مرزا اقبال شامل ہیں جس سے ان کی جعلسازی عیاں ہو جاتی ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1