چودھری نثار اور خورشید شاہ کے حامی میدان میں آگئے ، لفظی جنگ میں تیزی

چودھری نثار اور خورشید شاہ کے حامی میدان میں آگئے ، لفظی جنگ میں تیزی
 چودھری نثار اور خورشید شاہ کے حامی میدان میں آگئے ، لفظی جنگ میں تیزی

  

 اسلام آباد،سکھر (آن لائن،مانیٹرنگ ڈیسک) چوہدری نثار علی خان کی گزشتہ روز کی پریس کا نفرس کے بعد خو رشید شا ہ کے حا می پیپلز پارٹی کے رہنما ؤں اور چوہدری نثار کے حما یتی وفا قی وزراء کے درمیا ن’’ لفظی جنگ‘‘ عروج پر پہنچ گئی، ایک دوسرے کے خلا ف الزا ما ت پر مبنی بیا ن با زی کا سلسلہ انتہا کو پہنچ گیا۔سکھر میں اپنی رہائش گاہ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہو ئے قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خو رشید احمد شاہ نے کہا ہے کہ اپنے اوپر لگنے والے الزامات کا جواب پارلیمنٹ میں نواز شریف کے سامنے دوں گا اور ان سے پوچھوں گا کہ میں نے ان سے کیا اپنی ذات کو فا ئدہ پہنچایا ہے اگر وہ ثابت کر گئے تو سیا ست کو خیر با دکہہ دوں گا اگر انہوں نے فیصلہ نہ کیا تو کہیں اور جا ؤں گا ۔ انہوں نے کہا کہ میں جیسا پہلے تھا اب بھی ویسا ہی ہوں ،الزامات لگا نے والے ما ضی میں میرا ہا تھ چو متے تھے، ہم نے نہ کبھی کسی کی حکو مت بچائی ہے اور نہ بچائیں گے ،ہم نے تو جمہو ریت اور پا رلیمنٹ کو بچا یا ہے جس کے لیے ہم پر فرینڈلی اپوزیشن کے بھی الزامات لگے۔انہوں نے کہا کہ میں نے کون سی ایسی بات کہہ دی کہ کسی کو پریشانی لاحق ہو گئی جو بات میں کر رہا ہوں وہ آئندہ چار سدہ اور پشاور کے بچوں کے لواحقین کریں گے۔ میں نے کسی کی بیما ری کا کبھی مذاق نہیں اڑایا ہے بلکہ ہو سکا تو اسے صحتیابی کی دعا دی ہو گی، میں بیس کروڑ عوام کا اپوزیشن لیڈر ہوں ان کی اپوزیشن سے توقعات وابستہ ہیں ہمیں پوا ئنٹ اسکورننگ کرنا ہو تی تو عمران خان جب کنٹینر پر تھے اس وقت کر تے یا جب ایم کیو ایم نے استعفے دیئے تھے اس وقت کرتے مگر ہم نے ایسا نہیں کیا ۔الزامات لگانا ان کا وطیرہ بن چکا ہے جن کو اب عوام جانتے ہیں چلو ایسا تو ہوا جو شخص بڑئے بڑے واقعات پر بھی ایک لفظ نہیں بو لا،میرے بیان نے اسے ایسی کو ن سی وٹامن کی گو لی دے دی وہ چا رپائی سے اٹھ بیٹھا اور میدان میں آگیا۔ میں نواز شریف سے کہتا آیا ہوں کہ اس نے آستین میں سانپ پال رکھے ہیں جو ڈستے کسی اور کو ہیں اور زہر کسی اور کو چڑھتا ہے میں نے تو چار سدہ واقع پر جو ڈیشل انکوائری کا کہا ہے کیا ہم نے اپنے دور حکو مت میں کئی واقعات پر جو ڈیشل انکوا ئریاں نہیں کرائیں ہم نے حکو مت کی سپورٹ کسی پو ائنٹ اسکورننگ کے لیے نہیں کی دہشت گر دی کے خا تمے کے لئے کی ہے۔ پیپلز پارٹی کے رہنما اعتزاز احسن نے کہا ہے کہ ہووزیراعظم بزدل کابینہ تحلیل کر کے عوامی حکومت قائم کریں ۔ انہوں ایک بیا ن میں کہا ہے کہ ملک حالت جنگ میں ہے ۔ وزیر داخلہ کہتے ہیں مجھے وزیر دفاع سے ملنے کی ضرورت ہی نہیں۔ میں فوج اور دیگر اداروں سے ڈائریکٹ ہوں۔ وزیر دفاع کہتے ہیں میں نے 4 سال سے وزیر داخلہ سے ہاتھ نہیں ملایا۔ انہوں نے کہا وزراء ایک دوسرے سے بات نہیں کرتے تو پھر وزا رتوں کو کیسے چلائیں گے۔ 3 سے 4 وزارتوں کے وزراء کو تبدیل کیا جانا چاہیے۔ انہوں نے وزیراعظم کو مشورہ دیا کہ وہ اپنی پارٹی میں موجود نوجوان قیادت کو سامنے لائیں، پیپلزپارٹی کے رہنماء اور سینیٹر سعید غنی نے کہا ہے کہ چوہدری نثار علی خان اور عمران خان پیر بھائی ہیں اور یہ دونوں حکیم اللہ محسود کی ہلاکت پر روئے تھے۔ سعید غنی نے کہا کہ چو دھری نثار اور عمران خان کے درمیان مک مکا ہے جس کی وجہ سے ہی ڈی آئی خان جیل ٹوٹنے کی تحقیقات نہیں ہوتیں جبکہ وزیراعظم نواز شریف نے جلاوطنی بھی چوہدری نثار علی خان کی وجہ سے ہی کاٹی۔

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )وفاقی وزیر برائے دفاعی پیداوار رانا تنویر نے الزام عائد کیا ہے کہ پیپلز پارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے اپنا اثرورسوخ استعمال کر کے اپنے بھائی کو چیئر مین انجینئرنگ کونسل منتخب کرایا ،انہو ں نے دعویٰ کیا کہ خورشید شاہ نے اپنے بھائی کی مدت ملازمت میں توسیع کے لیے مجھ سے درخواست بھی کی۔اسلام آباد میں میڈ یا سے گفتگو کرتے ہوئے رانا تنویر نے کہا کہ مدت ملازمت میں توسیع کی سفارش موثر نہ ہوئی تو خورشید شاہ اپنے بھائی کو میرے دفتر لے آئے اور مدت ملازمت میں توسیع کے لیے منت کرتے رہے۔انہوں نے کہا کہ جب میں نے خورشید شاہ کے بھائی کی مدت ملازمت میں توسیع سے معذرت کرلی تو میری شکایت لے کر بہت دور تک چلے گئے۔انہوں نے کہا کہ خورشید شاہ اسمبلی جائیں یا عدالت ،ان کے کردار پر پہلے گواہی دوں گا ،اگر عدالت بلائے گی تو تمام کوائف لے کر جاؤں گا۔

مزید : صفحہ اول