اکوڑہ میں سرکاری سکولوں کی سیکورٹی اساتذہ کیلئے درد سر

اکوڑہ میں سرکاری سکولوں کی سیکورٹی اساتذہ کیلئے درد سر

اکوڑہ خٹک(نمائندہ پاکستان)اکوڑہ سرکاری سکولوں کی سیکورٹی کا معاملہ استاتذہ کے لئے وبال جان بن گیا۔ محکمہ تعلیم او ر پولیس افسران نے سیکوٹری کی ذمہ داری سکول کے ہیڈ ماسٹر / پرنسپل پر تھوپ دی۔محکمہ تعلیم نوشہرہ کے اے ڈی او نے ضلع بھر کے سکولوں کے ہیڈ ماسٹر اور پرنسپل کو اپنی مد د اپ کے تحت سیکوٹری کے انتظامات کرنے کا ٹاسک دے دیا۔اکوڑہ خٹک سے ٹیکس کی مد میں تحصیل جہانگیرہ کو کڑوروں روپے کی امدنی ہونے کے باوجود تحصیل جہانگیرہ میں اکوڑہ خٹک کے تمام سرکاری سکول سیکوئر نہیں ۔حکومت سنجیدگی سے سکولوں کی سیکوٹری کا معملہ حل کرئے۔ پیر سید ذوالفقار علیشاہ بادشاہ۔تٖفصیلات کے مطابق گزشتہ دنوں ڈسٹرکٹ پولیس افیسر کی طرف سے سرکاری سکولوں کو سیکوٹری کے حوالے سے ملنے والے نوٹس اکوڑہ خٹک اور گرد نواح میں واقع تمام سرکاری سکولوں کے ہیڈ ماسٹرز کے لئے و بال جان بن گئے جبکہ محکمہ تعلیم نوشہرہ کے اے ڈی اونے تمام سکولز کے ہیڈ ماسٹر کے ساتھ میٹنگ کے دوران ان کے سکولوں کی سیکوٹری کے انتظاما ت ا پنی مدد اپ کے تحت کرنے کا ٹاسک دے دیا۔سکول انچارج کو سکول کی سیکوٹری کے لئے اسلحہ اور CCTV کیمرے اپنی جیب سے خریدنے کا کہا گیا۔گورنمنٹ پرائمری سکول رسالگڑھ میں PTAکمیٹی کے ممبران کا سیکوٹڑی کے حوالے سے اہم جلاس ہوا جس میں پیر ذوالفقار علیشاہ بادشاہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اکوڑہ خٹک سے تحصیل جہانگیرہ کو ٹیکس کی مد میں کڑوروں روپے کی امدنی ہورہی ہےMPA اور تحصیل ناظم اپنے علاقے کے سرکار ی سکولوں کی سیکوٹری کے حوالے سے عوام میں پائے جانے والے خدشات دو ر کرنے کے لئے اپنا رول ادا کریں ۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان اور پرویز خٹک وزیر اعلی کے پی کے ائے روز پرنٹ میڈیا اور الیکٹرنک میڈیا پر سکولوں کے نظام کو بہتر کرنے کے دعوے کرتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ اعلانات کرنا اسان کام ہے لیکن ان پر عملی کام کرنا صرف میڈیا تک محدود ہے انہوں نے کہا کہ PTI کے MPA ادریس خٹک غیر ضروری کاموں پر اربوں روپے کے فنڈ ضائع کرنے کے بجائے اپنے حلقے میں واقع سرکاری سکولوں کی سیکوٹری پر توجہ دیں۔ انہوں نے کہا سکولوں کی سیکوٹری کی ذمہ داری کے انتظامات سکول کے ہیڈ ماسٹرتک محدود نہیں ۔ استا تذہ کا تنخواہوں سے بمشکل ا گزارہ ہو رہا ہے انہوں نے علاقے کے MPA ادریس خٹک تحصیل ناظم جہانگیرہ صادق خان اور محکمہ تعلیم اور پولیس افسران سے مطالبہ کیا کہ وہ ہمارے سکولوں کی سیکوٹری کو یقینی بنانے کے لئے ٹھوس اقدام کریسکول کے ہیڈ ماسٹرز / پرنسپل کو طلباء کی تعلیم پر توجہ دینے کے بجائے سیکوٹری کی ذمہ داری تھوپنے کی کوشش کر کے استاتذہ کا قیمتی وقت ضائع کرنے کی کوشش نہ کریں انہوں نے کہا کہ خدا نخواستہ اگر علاقے میں کسی بھی سرکاری سکولز میں ناخوشگوار واقعہ پیش ایا تو اس کی تمام تر ذمہ داری محکمہ تعلیم کے اعلی افسران اور علاقے کے MPA اوتحصیل ناظم پر ہو گی ۔

مزید : پشاورصفحہ اول