وی سی عبدالولی خان کی گرفتار روکنے کیلئے حکم امتناعی میں توسیع

وی سی عبدالولی خان کی گرفتار روکنے کیلئے حکم امتناعی میں توسیع

پشاور(نیوز رپورٹر) پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس مظہرعالم میانخیل اور جسٹس وقار احمد سیٹھ پر مشتمل ڈویژن بنچ نے عبدالولی خان یونیورسٹی میں میرٹ کے خلاف 700 بھرتیاں کرنے کے حوالے سے نیب انکوائری میں وائس چانسلر عبدالولی خان یونیورسٹی ڈاکٹر احسان علی کی ممکنہ گرفتاری سے روکنے کے لئیے جاری حکم امتناعی میں توسیع کرنے کے احکامات جاری کر دئیے ہیں۔فاضل عدالت نے کیس کی سماعت کی تو عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست گزار ڈاکٹر احسان علی کے وکیل قاضی انور سپریم کورٹ میں دیگر کیسز میں پیش ہو رہے ہیں لہذا آج ہائی کورٹ میں پیش نہیں ہو سکتے جس پر فاضل عدالت نے نیب کی جانب سے ڈاکٹر احسان علی کی ممکنہ گرفتاری سے روکنے کے لئیے جاری حکم امتناعی میں توسیع کرنے کے احکامات جاری کر دئیے ہیں۔واضح رہے کہ ڈاکٹر احسان علی پر الزام ہے کہ اس نے عبدالولی خان یونیورسٹی میں میرٹ کے خلاف 700 کے قریب بھرتیاں کی تھی جس کے خلاف نیب نے انکوائری شروع کی تھی تاہم گرفتاری سے بچنے کے لئیے ڈاکٹر احسان علی نے پشاور ہائی کورٹ میں رٹ دائر کی اورعدالت عالیہ نے 10 دسمبر2015 کو حکم امتناعی جاری کیا تھا اور درخواست گزار کو ہدایت کی تھی کہ وہ نیب کے ساتھ انکوائری میں تعاون کریں۔

مزید : ملتان صفحہ اول