حکومت نے  ریئل سٹیٹ سیکٹر کے گرد گھیرا تنگ کرنے کے فیصلے کو حتمی شکل دے دی

حکومت نے  ریئل سٹیٹ سیکٹر کے گرد گھیرا تنگ کرنے کے فیصلے کو حتمی شکل دے دی
حکومت نے  ریئل سٹیٹ سیکٹر کے گرد گھیرا تنگ کرنے کے فیصلے کو حتمی شکل دے دی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اکنامک ریفارم پیکج کے بعد حکومت نے  ریئل سٹیٹ سیکٹر کے گرد گھیرا تنگ کرنے کے فیصلے کو حتمی شکل دے دی ،شکنجہ کسنے کے لئے پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹر محسن عزیز نے  ریئل سٹیٹ ریگولیٹری اتھارٹی بل کو حتمی شکل دے دی۔

نجی ٹی وی کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کی حکومتی رضامندی سے سینیٹر محسن عزیز نے ریئل سٹیٹ ریگولیٹری اتھارٹی بل کو حتمی شکل دے دی ہے ،ریئل سٹیٹ ریگولیٹری اتھارٹی کے مجوزہ  بل کے تحت سوسائٹی مالکان اور پراپرٹی ڈیلرز کی رجسٹریشن لازمی ہوگی۔ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے ترقیاتی کاموں کی نگرانی ہوگی اور لین دین کے لیے گزشتہ پانچ سالوں کا ریکارڈ فراہم کرنا لازمی ہوگا۔ ریئل سٹیٹ ریگولیٹری اتھارٹی بل میں قرار دیا گیا ہے کہ  مالی سال کے آخر پر پروموٹرز کے لیے ضروری ہوگا کہ اکاؤنٹس کا آڈٹ لازمی کرائے جبکہ بل میں تجویز پیش کی گئی ہے کہ رولز کی خلاف ورزی پر منصوبے کی رجسٹریشن منسوخ کردی جائے گی۔رئیل سٹیٹ اتھارٹی کے فیصلوں پراپیل کے لیے اپیلٹ ٹربیونل بھی قائم ہوگا۔وفاقی حکومت منصوبوں کی رجسٹریشن کے لیے آن لائن نظام بھی متعارف کرائے گی۔

مزید : رئیل سٹیٹ