کرونا:اورنج میٹرو ٹرین سمیت، سی پیک، منصوبے متاثر!

کرونا:اورنج میٹرو ٹرین سمیت، سی پیک، منصوبے متاثر!

  



چین میں کرونا وائرس سے متاثر اور ہلاک ہونے والوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے تو دنیا بھر کے کئی ترقی یافتہ ممالک بھی اندیشوں سے دوچار ہیں۔ پاکستان جو اب بھی ترقی پذیر کہلاتا ہے۔ اس وائرس کی وجہ سے ترقیاتی منصوبوں کی وجہ سے بھی ان متاثرین میں شامل ہو گیا کہ یہاں سی پیک کی وجہ سے چینیوں کی آمد و رفت ہے جو یہاں کام بھی کرتے ہیں، اب احتیاطی تدابیر کے حوالے سے ہر منصوبے پر کام کرنے والوں کی سکریننگ شروع ہونا ہے جبکہ جو چینی اپنے ملک گئے ہوئے ہیں ان کی واپسی بھی رک گئی جس کی وجہ سے جاری کاموں میں سستی آ گئی ہے انہی میں لاہور اورنج میٹرو ٹرین بھی شامل ہے۔ حکومت پنجاب نے اس کے لئے 23مارچ کی حد مقرر کر رکھی ہے کہ اس روز اس کا افتتاح ہونا ہے۔ آج کل اس پر کام کو آخری شکل دی جا رہی تھی اور یہ بھی طے کیا جا رہا تھا کہ سیکیورٹی اور آپریشنل کام کے لئے ٹھیکہ دیا جائے اس کے لئے عمل جاری ہے کہ اب کرونا وائرس کے خدشے کے پیش نظر اورنج میٹرو ٹرین پر بھی کام بند کر دیا گیا ہے۔ اس سے اس ٹرین کو چلانے کی اب دی گئی حتمی تاریخ (23مارچ) بھی مشکل نظر آ رہی ہے کہ اس روز یہ ٹرین چل سکے۔ اگر ایسا ہوا تو لاگت بھی بڑھ جائے گی۔ وزیراعظم عمران خان سی پیک کے جاری منصوبوں کو جلد اور بروقت مکمل کرنے کی ہدایات جاری کر رہے ہیں، لیکن یہاں رفتار قائم رکھنا مشکل ہو گیا۔ بہتر عمل یہ ہے کہ جس قدر جلد ممکن ہو، حفاظتی اور علاج والی کٹس منگوائی جائیں اور سی پیک پر کام کرنے والے تمام کارکنوں (معہ چینی+پاکستانی) کی سکریننگ مکمل کرنے کا انتظام کیا جائے اور حفاظتی اقدامات کے بعد کام شروع رکھا جائے ورنہ تاخیر کے ساتھ لاگت میں اضافہ ناگزیر ہو گا۔

مزید : رائے /اداریہ