تمباکو باربی کیو اور ڈبے والی غذاکینسر کی بڑی وجوہات ہیں، طبی ماہرین

تمباکو باربی کیو اور ڈبے والی غذاکینسر کی بڑی وجوہات ہیں، طبی ماہرین

  



لاہور (سٹی رپورٹر) قومی کینسر آگاہی پروگرام و بین الاقوامی کانفرنس برائے ریسرچ آن آنکالوجی و کینسر سائنسز کے سلسلے میں پنجاب یونیورسٹی کے زیر اہتمام فیصل آڈیٹوریم میں کانفرنس سے اظہار خیال کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ کینسر سے آگاہی و بر وقت تشخیص سے انسانی زندگی بچائی جا سکتی ہیں۔ اس موقع پر وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی پروفیسر نیازاحمد اختر، ممبرقومی اسمبلی ڈاکٹر سیمی بخاری، کیمبرج یونیورسٹی برطانیہ سے پروفیسر ڈاکٹر ٹیموتھی کوکس، مشی گن یونیورسٹی امریکہ سے پروفیسر ڈاکٹر جیمز شائمن، وائس چانسلر فیصل آباد میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر ظفر علی چوہدری، کو پیٹرن پروفیسر ڈاکٹر ارشد چیمہ، صدر سرجیکل اونکولوجی سوسائٹی آف پاکستان پروفیسر ڈاکٹر ہارون جاوید، ڈاکٹر ذیشان دانش، ڈائریکٹر انسٹی ٹیوٹ آف کمیونیکیشن سٹڈیز پروفیسر ڈاکٹر نوشینہ سلیم، فیکلٹی ممبران اورطلباؤ طالبات نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ اپنے خطاب میں وائس چانسلر پروفیسر نیاز احمد نے کہا کہ پنجاب یونیورسٹی میں کینسر ریسرچ گروپ قائم کیا گیا ہے جس میں 35مختلف چھوٹے گروپس کینسر سے لڑنے کیلئے تحقیقی کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کئی افراد کو بیماری کا اس وقت علم ہوتا ہے جب یہ آخری سٹیج پر پہنچ چکی ہوتی ہے۔۔ انہوں نے کینسر کے خلاف آگاہی فراہم کرنے کیلئے بہترین تقریب کے انعقاد پر ڈاکٹر ارشد چیمہ اور ڈاکٹر ذیشان دانش کی کاوشوں کوسراہا۔ ڈاکٹر ٹیموتھی کوکس نے کہا کہ پاکستان میں تمباکو اور منہ کے کینسر کے باعث زیادہ تر افراد موت کا شکار ہو رہے ہیں، بیماری کا آغاز میں پتہ لگانے کیلئے قومی کینسر رجسٹری اور تربیت یافتہ ہیلتھ کیئر ٹرینرز کو پروگرام میں شامل کیا جانا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ خواتین کو بریسٹ کینسر سے بچنے کیلئے خود معائنہ کی عادات کو اپنانا ہوگا۔ ڈاکٹر جیمز شیام نے موذی مرض سے محفوظ رہنے کیلئے آگاہی کے ساتھ ساتھ صحت مندانہ طرز زندگی کو اپنانے پر زور دیا۔ مرنے والوں میں ہر پانچوا ں شخص تمباکو نوشی کا شکار ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر ظفر علی چوہدری نے کہا کہ کوئلے پر پکی خوارک مشلاََ بار بی کیو، اچاری و زیادہ نمک کا استعمال، خوراک میں مختلف رنکوں کا استعمال، محفوظ ڈبے والی غذا کا استعمال، آلودہ پانی سے اگائی سبزیوں کے ذیادہ استعمال سے کینسر ہو سکتا ہے۔ بعد ازاں شرکاء کی جانب سے فیصل آڈیٹوریم تا الرازی ہال تک کینسر کے خلاف آگاہی واک کا انعقاد کیاگیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1