10ہزا ر سے زائد وفاقی ملازمین کے بے نظیر سپورٹ پروگرام سے ”وظیفہ“ لینے کا انکشاف

10ہزا ر سے زائد وفاقی ملازمین کے بے نظیر سپورٹ پروگرام سے ”وظیفہ“ لینے کا ...

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) بے نظیرانکم سپورٹ پروگرام سے گریڈایک تا16کے10ہزار190وفاقی ملازمین کے غیرقانونی طور پر وظیفہ لینے کا انکشاف ہوا، افسران اپنے نام یا اہل خانہ کے نام پر وظیفہ وصول کرتے رہے۔تفصیلات کے مطابق بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کی بہتی گنگا میں ہزاروں ملازمین نے ہاتھ دھوئے، گریڈ ایک تا 16کے10ہزار190وفاقی ملازمین نے غیر قانونی طور پر وظیفہ لیا۔دستاویزات میں بتایا گیا کہ 123سے زائد افسران اپنے نام پر بی آئی ایس پی وظیفہ لیتے رہے جبکہ دیگر تمام ملازمین اپنے اہلخانہ کے نام پر وظیفہ وصول کرتے رہے، جن میں گریڈ 1کے279سے زائد، گریڈ 2کے 469، گریڈ 3کے 471 افسران، گریڈ 5 کے 670، گریڈ 6کے 2236سے زائد ملازمین شامل ہیں۔دستاویز کے مطابق گریڈ 7کے 1756سے زائد ملازمین نے غیرقانونی طور پر استفادہ کیا، گریڈ 8کے1444سے زائد، گریڈ 9کے1164سے زائد ملازمین، گریڈ 10کے 252، گریڈ 11کے9557 سے زائد ملازمین نے فائدہ اٹھایا۔گریڈ 12کے237 سے زائد، گریڈ 13 کے 32 سے زائد ملازمین، گریڈ 14 کے 126 سے زائد، گریڈ 15 کے18 ملازمین، گریڈ 16 کے 158 سے زائد اور گریڈ17 کے 48 سے زائد افسران نے غیرقانونی طور پر استفادہ کیا۔رپورٹ کے مطابق گریڈ 17 سے 21 کے 2 ہزار 543 سرکاری افسران میں سے متعدد نے بیویوں کے نام پر پیسے وصول کیے، بلوچستان میں سب سے زیادہ سرکاری افسرپروگرام سے مستفید ہوئے۔سندھ میں گریڈ 18 کے 342 افسران نے پروگرام سے فائدہ اٹھایا جبکہ سندھ سے گریڈ 21 کے 3 افسران بھی شامل تھے۔بعد ازاں پروگرام میں کرپشن کی تحقیقات کے لیے نیب سے رجوع کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے جوڈیشل ایکٹو ازم پینل نے چیئرمین نیب، ڈی جی، صدر مملکت عارف علوی اور وزیر اعظم عمران خان کو خط لکھا۔

بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام

مزید : صفحہ اول