ہسپتالوں کا فضلہ ٹھکانے لگانے، کرونا وائرس کی رو ک تھا م کے حوالے سے رپورٹ طلب

        ہسپتالوں کا فضلہ ٹھکانے لگانے، کرونا وائرس کی رو ک تھا م کے حوالے سے ...

  



لاہور (نامہ نگار خصوصی)چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس مامون رشید شیخ نے صوبائی وزیرصحت ڈاکٹر یاسمین راشدکوہسپتالوں کافضلہ ٹھکانے لگانے اورکرونا وائرس کو کنٹرول کرنے کے حوالے سے کئے گئے اقدامات کی رپورٹ طلب کرلی،عدالت نے ہسپتالوں کی انسپکشن اورجرمانوں کی تفصیلات بھی پیش کرنے کاحکم دیاہے،عدالت نے محکمہ صحت اور محکمہ ماحولیات کے افسروں کو درخواست گزار کے وکیل اظہر صدیق کے ہمراہ ہسپتالوں کا دورہ کرکے تفصیلی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔فاضل عدالت نے ہیپاٹائٹس کے پھیلاؤ اورہسپتالوں کافضلہ نہ اٹھانے کے خلاف کیس میں یاسمین راشد کو طلب کررکھاتھا،عدالتی حکم کے مطابق یاسمین راشد،سیکرٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیپٹن (ر) محمد عثمان کے ہمراہ عدالت میں پیش ہوئیں،فاضل جج نے وزیرصحت سے کہا کہ عدالتوں میں پیش ہونے والے افسر مسائل سے لاعلم ہیں،سرکاری ہسپتالوں میں مریضوں کو طبی سہولیات نہیں مل رہیں، اس حوالے سے عملی اقدامات کی ضرورت ہے،جس پروزیر صحت نے عدالت کو مثبت اقدامات کی یقین دہانی کروائی،عدالت کے استفسار پرڈاکٹریاسمین راشد نے کہا کہ کرونا وائرس کی روک تھام کے لئے اقدامات کئے جارہے ہیں،شہریوں کو وائرس سے بچاؤکے لئے حفاظتی اقدامات سے آگاہ کیا جارہاہے،صوبائی وزیرصحت نے عدالت کوبتایا کہ جن ہسپتالوں کافضلہ نجی کمپنی اٹھانے کی ذمہ دار ہے وہاں مسائل ہیں، گنگارام ہسپتال کے پاس 600 بیڈ کے نئے ہسپتال کا سنگ بنیاد رکھنے جارہے ہیں،جناح ہسپتال ٹو کا پی سی ون مکمل کرلیا گیا ہے،نشتر ہسپتال ٹو پرکام جاری ہے،راجن پور، لیہ اور اٹک میں جنرل ہسپتال بنائے جا رہے ہیں۔ عدالت کی طرف سے اٹھائے گئے معاملات پرپیش رفت رپورٹ تین ہفتوں میں عدالت میں پیش کی جائے،اس کیس کی مزید سماعت 6فروری کو ہوگی۔

ہسپتال، فضلہ

مزید : صفحہ آخر