محکمہ آبپاشی سندھ میں کرپٹ عناصر کے خلاف کاروائی کا فیصلہ

    محکمہ آبپاشی سندھ میں کرپٹ عناصر کے خلاف کاروائی کا فیصلہ

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر) سندھ کے وزیر برائے آبپاشی سہیل انور سیال نے کہا کہ سندھ بھر میں غیر قانونی واٹر کورسز کے خلاف آپریشن کیا جائے۔جبکہ محکمہ آبپاشی سندھ میں کرپٹ عناصر کے خلاف قانون کے مطابق محکمہ جاتی کارروائی کی جائیگی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کی ہدایت پر شکارپور رنک کمپلیکس،وارھ ریگو لیٹر، گٹنگ ریگولیٹر، قمبرشھدادکوٹ کے بند، کینالوں اور مختلف شاخوں کا دورہ کے موقع پر میڈیا کے نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر سہیل انور سیال کے ہمراہ رکن سندھ اسمبلی گھنور خان اسران، رکن سندھ اسمبلی سردار خان چانڈیو، حاجی قمرالدین گوپان، محمد پنھل سومرو، ریاض الدین ابڑو، عبدالغفار بروہی، ڈی سی قمبر، علاقہ معززین اور محکمہ آبپاشی کے چیف انجینئر لاڑکانہ، چیف انجینئر سکھر، چیف انجینئر ڈرینج،ایس ای لاڑکانہ ڈویڑن اور ایکس سی این لاڑکانہ ڈویژن موجود تھے۔ صوبائی وزیر سہیل انور سیال نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی صوبے بھر میں ریکارڈ ترقیاتی کام کروا رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ سندھ کی ترقی میں زراعت کا اہم کردار ہے اور صوبے بھر کے کاشتکاروں اور کسانوں کو بروقت و بلاتعطل پانی کی فراہمی کے لیے محکمہ آبپاشی سندھ کے تمام دستیاب وسائل بروئے کار لا رہے ہیں۔ جبکہ صوبے بھر میں پانی کے ذخائر اور کاشتکاروں کے لیے آنے والے سیزن کے حوالے سے پانی کی موجودہ صورتحال پر کڑی نظر رکھی ہوئی ہے۔صوبائی وزیر برائے آبپاشی سہیل انور سیال نے مزید کہا کہ ٹیل اور کچے کے کاشتکاروں کو آخری سرے تک پانی پہنچانے کے لیے پانی کی منصفانہ تقسیم کے عمل میں مزید شفافیت لائی جارہی ہے۔اس موقع پر محکمہ آبپاشی کے عہدیداران کو سختی سے اَحکامات جاری کرتے ہوئے سہیل انور سیال نے کہا کہ پانی کی منصفانہ تقسیم اور پانی چوروں کے خلاف کاروائی میں کسی بھی قسم کی کوتاہی کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔اور اس ضمن میں محکمہ آبپاشی سندھ کا افسران و عملہ کوتاہی کا مرتکب پایا گیا تو اس کے خلاف قانون کے مطابق محکمہ جاتی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر