پی ٹی ایم کے گرفتار 23کارکن جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل منتقل

    پی ٹی ایم کے گرفتار 23کارکن جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل منتقل

  



 اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)عدالت نے پی ٹی ایم کے گرفتار کارکنوں کو جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھیج دیا۔ بدھ کو پشتون تحفظ موومنٹ کے سربراہ منظور پشتین کی گرفتاری کیخلاف احتجاج کرنیوالے 23ملزمان کو کوہسار پولیس نے حراست میں لیا تھا جنہیں گزشتہ روز جوڈیشل مجسٹریٹ شعیب اختر کی عدالت میں پیش کیا گیا۔ پولیس نے استدعا کی کہ مظاہرین کو جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھیجا جائے۔مظاہرین کے وکلاء نے جوڈیشل ریمانڈ کی مخالفت کر دی۔ وکلاء نے کہاہم اپنا پرامن احتجاج کر رہے تھے،کوئی توڑ پھوڑ،مزاحمت نہیں کی گئی،پولیس نے دباؤ میں آکر پرامن مظاہرین کیخلاف مقدمہ درج کیا ہے۔ وکیل اسد جمال نے کہاپولیس کا مقدمہ بدنیتی پر مبنی اور دفعہ 505،اے بی اور 124 اے کا اطلاق ہی نہیں ہوتا، پولیس کہتی ہے فورسز کیخلاف نعرے بازی کی گئی،نعرے بازی کو لیڈ کون کر رہا تھا،پولیس کے پاس ثبو ت کیا ہے،مقدمہ خارج کیا جائے۔پولیس کے مطابق ابھی چالان بنانا باقی ہے اور کچھ ثبوت بھی اکٹھے کرنا ہیں،پولیس نے استدعا کی کہ ملز مان کو جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھیجا جائے عدالت نے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا،بعد ازاں عدالت نے پی ٹی ایم کے گرفتار کا رکنوں کو جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھیج دیا۔عدالت نے ملزمان کو 12 فروری کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا۔عدالت کی جانب سے گرفتار 23 ملزم کو اڈیالہ جیل بھیجنے کا حکم سنایا گیا۔

پی ٹی ایم کارکن

مزید : پشاورصفحہ آخر