12کروڑ سے زائد افراد سرائسز کی بیماری میں مبتلا ہیں،ماہرین

  12کروڑ سے زائد افراد سرائسز کی بیماری میں مبتلا ہیں،ماہرین

  



لاہور (پ ر)سرائسسزایک دائمی جلد ی سوزش کی بیماری ہے۔ دنیا بھر میں 12کروڑ25لاکھ افراد اب تک اس بیماری میں مبتلا ہوچکے ہیں۔ پاکستان حجامہ کپنگ ایسوسی ایشن کی سروے رپورٹ کے مطابق تقریباً3ہزار سرائسسز مریضوں کے سروے سے معلوم ہوا ہے کہ 20فیصد خواتین کی رائے تھی کہ اس بیماری کی وجہ سے ان کے روز مرہ کی زندگی شدید متاثر ہوئی ہے حجامہ طریقہ علاج سے سرائسسز بیماری کا مکمل علاج ممکن ہے۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان حجامہ کپنگ ایسوسی ایشن پنجاب کے صدر حکیم محمد ابو بکر، حکیم محمد افضل میو اور طبیبہ فرح تبسم نے ایک ورکشاپ سے خطاب کے دوران کیا۔

سرائسسز بیماری کا علاج حجامہ سے ہی ممکن ہے کے حوالہ سے مطب الفاروق و حجامہ سنٹر نزد شیزان فیکٹری لاہور میں منعقدہ مجلس مذکراہ میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ جینیاتی طور 23.4فیصد سے لیکر71فیصد مریضوں میں سرائسسزموروثی ہوتا ہے۔ تحقیقات سے یہ بھی پتہ چلا ہے کہ سرائسسز کی مریض خواتین زیادہ بیماری کے اثرات سے متاثر ہوتی ہیں اس لئے انہیں زیادہ توجہ کی ضرورت ہوتی ہے۔ عام لوگوں کے مقابلے میں سرائسسز کے مریضوں میں دل کے دورے سے اموات بھی جلد واقع ہوتی ہیں۔ دنیا بھر میں یہ بیماری عام ہے جبکہ پسماندہ ملکوں میں اس کی شرح20فیصدسے50فیصد تک پائی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حجامہ طریقہ علاج سے کئی سرائسسز بیماری میں مبتلا مریضوں کا کامیاب علاج کیا گیا جو کہ مکمل شفایاب ہوچکے ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4