ترجمان دفتر خارجہ کو چین میں پاکستانی طلبہ سے متعلق ٹویٹ پر شدید تنقید کا سامنا

ترجمان دفتر خارجہ کو چین میں پاکستانی طلبہ سے متعلق ٹویٹ پر شدید تنقید کا ...

  



اسلام آ باد (آ ئی این پی) ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی کے ووہان میں کرونا وائرس کی وباء سے پاکستانی طلبہ اور شہریوں کو سہولیات فراہم کرنے کے دعوے پرمبنی ٹویٹ پر شدید ردعمل سامنے آگیا،جہاں ایک طرف صارفین کی کڑی تنقید کر رہے ہیں، وہیں چین کے شہرووہان میں موجود پاکستانی طالب علم اور شہری ظاہر کرنیوالے صارفین نے ردعمل میں کہا ترجمان دفتر خارجہ کی ٹویٹ جھوٹ پر مبنی ہے، اگر ہمارے لئے کچھ کیا نہیں جا رہا تو جھوٹ نہیں بولنا چاہیے، انکا مزید کہنا تھا ہم محصور ہیں، چین میں پاکستانی سفارتخانے سے کسی نے کوئی رابطہ کیا، نہ میڈیکل چیک اپ ہو رہا ہے،جبکہ کھانا پینا بھی مفت فراہم نہیں کیا جا رہا،ہماری زندگیوں کیساتھ مت کھیلا جائے، طالب علموں کو یہاں سے نکالا جائے، ووہان میں صرف ایک یونیورسٹی کے علاوہ کوئی یونیورسٹی مفت کھانا فراہم نہیں کر رہی، ایک اور صارف نے لکھا مجھے نہیں معلوم کیسے بہادری کیساتھ جھوٹ بولا جا رہا ہے۔ یاد رہے گزشتہ روز ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فارقی نے سماجی رابطہ کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کیا کہ چین کے شہر ووہان میں کرونا وائرس وباء کے سلسلہ میں وزارت خارجہ چین کے حکام کیساتھ مسلسل رابطہ میں ہے اور تازہ ترین معلومات حا صل کی جا رہی ہیں، چین میں ہمارا سفار ت خانہ ووہان میں پاکستانی شہریوں اور طالب علموں کیساتھ وسیع رابطہ کر رہا ہے، چین کی جامعات پاکستانی طلبہ کو مفت کھانا اور انکی صحت کی مانیٹرنگ یقینی بنا رہی ہیں۔

پاکستانی طلبہ

مزید : صفحہ اول