سلامتی کونسل نے ایک مرتبہ پھر پاکستانی موقف کی تائید کی،ثوبیہ کمال

    سلامتی کونسل نے ایک مرتبہ پھر پاکستانی موقف کی تائید کی،ثوبیہ کمال

  



لاہور(پ ر) ممبر قومی اسمبلی و وفاقی پارلیمانی سیکرٹری وزارت امور کشمیر و گلگت بلتستان ثوبیہ کمال خان نے کہاہے کہ پی ٹی آئی حکومت کی کامیاب خارجہ پالیسی کی بدولت 56سال بعد مسئلہ کشمیر سلامتی کونسل میں زیر بحث آیا۔ سلامتی کونسل نے اپنے حالیہ اجلاس میں ایک بار پھر پاکستانی موقف کی تائید کی ہے کہ مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قرارادوں کے مطابق حل کیا جائے۔انہوں نے کہاکہ مودی کے غاصبانہ اقدامات کی بدولت بھارت کا حقیقی چہرہ بے نقاب ہوچکا ہے، عالمی دنیا 80لاکھ نہتے کشمیریوں کو بھارتی ظلم و ستم سے نجات دلائے، بھارت کی جانب سے انسانی حقوق کی بدترین پامالی روکی جائے، مقبوضہ کشمیر میں کرفیو ختم کروانے کیلئے ہر فورم پر آواز بلند کی جائے اور عالمی دنیا مسئلہ کشمیر کے پر امن حل کیلئے اپنا کردار ادا کرے۔

انہوں نے مزید کہاکہ حکومت 5فروری یوم کشمیر ایک نئے جوش ولولہ سے منائیگی اور پوری قوم کشمیر کے ساتھ کھڑی ہوگی،بھارت میں مسلمانوں اور اقلیتوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے، مقبوضہ کشمیر میں نہتے لوگوں کو ریاستی دہشت گردی کا شکار بنایا جارہا ہے،بھارت کا مسلمانوں کیخلاف تعصبانہ رویہ علاقائی امن واستحکام کیلئے نقصان دہ ہے،کشمیریوں کے ساتھ بھارتی افواج کے مظالم قابل مذمت ہیں۔ ہندوستان کے تمام ادارے آر ایس ایس کے نظریہ کو پروان چڑھا رہے ہیں۔بھارت درحقیقت جمہوریت کے لبادے میں ایک انتہاپسند ریاست ہے جہاں ہندووں کے علاوہ تمام اقلیتوں کے حقوق سلب کئے جارہے ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4