جاپانیوں کی عمریں اتنی لمبی کیوں ہوتی ہیں؟ سائنسدانوں نے معمہ حل کرلیا

جاپانیوں کی عمریں اتنی لمبی کیوں ہوتی ہیں؟ سائنسدانوں نے معمہ حل کرلیا
جاپانیوں کی عمریں اتنی لمبی کیوں ہوتی ہیں؟ سائنسدانوں نے معمہ حل کرلیا

  



ٹوکیو(مانیٹرنگ ڈیسک) جاپانی شہری طویل العمری کے باعث بھی دنیا میں جانے جاتے ہیں۔ اب سائنسدانوں نے 1لاکھ جاپانی شہریوں پر تحقیق کے بعد بتا دیا ہے کہ ان کی عمریں زیادہ کیوں ہوتی ہیں۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں نے بتایا ہے کہ جاپانی شہریوں کی طویل العمری کا راز سوشی اور سوپ کے ساتھ میسو پیسٹ (Miso paste)اور نیٹو (Natto)کھانا ہے۔ان کھانوں میں فائبر اور پوٹاشیم بہت زیادہ مقدار میں پائے جاتے ہیں اور یہی ان کو طویل العمر بناتے ہیں۔

اس تحقیق میں نیشنل کینسر سنٹر جاپان کے سائنسدانوں نے 1لاکھ جاپانیوں کی غذائی عادات کا 15سال تک معائنہ کیا اور ان کے طبی ٹیسٹ کرکے ان کے ساتھ موازنہ کیا۔ اس موازنے میں معلوم ہوا کہ جو لوگ باقاعدگی سے خمیرہ سویا سے بنی مصنوعات، مثال کے طور پر میسو اور نیٹو، کھاتے تھے ان کے قبل از وقت مرنے کے امکانات دوسروں کی نسبت 10فیصد کم تھے۔ سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ ان چیزوں میں فائبر اور پوٹاشیم کے ساتھ دیگر ایسے کمپاﺅنڈز پائے جاتے ہیں جو جسم میں کولیسٹرول کو مستحکم رکھتے ہیں۔ واضح رہے کہ جاپان میں لوگ روایتی طور پر کم از کم 84سال عمر پاتے ہیں جو اقی دنیا میں سب سے زیادہ ہے اور زیادہ تر جاپانی اپنی صبح کا آغاز میسو سوپ کے ایک گرم پیالے سے کرتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس