روسی صدر پیوٹن نے بھی ’آیت اللہ خامنہ ای‘ بننے کی تیاری کرلی

روسی صدر پیوٹن نے بھی ’آیت اللہ خامنہ ای‘ بننے کی تیاری کرلی
روسی صدر پیوٹن نے بھی ’آیت اللہ خامنہ ای‘ بننے کی تیاری کرلی

  



ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک) روسی صدر ولادی میر پیوٹن نے اقتدار ہمیشہ اپنے ہاتھ میں رکھنے کے لیے روس کے حکومتی ڈھانچے میں گزشتہ دنوں بڑی تبدیلیاں کیں۔ ابتدائی طور پر معلوم ہوا کہ صدر پیوٹن تمام تر اختیارات وزیراعظم کے عہدے کو منتقل کرکے خود وزیراعظم بن جائیں گے لیکن اب خبر سامنے آ گئی ہے کہ ان کے لیے ایک نیا عہدہ بنایا جا رہا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق اس عہدے کا نام ’سپریم رولر‘ (Supreme Ruler)ہو گا جس پر صدارت سے ہٹنے کے بعد ولادی میر پیوٹن فائز ہوں گے۔ بہرحال یہ عہدہ بھی تاحال فائنل نہیں ہوا اور اس پر غوروخوض جاری ہے۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ دنوں ولادی میر پیوٹن کے حکم پر ان کے وزیراعظم سمیت پوری حکومت مستعفی ہو گئی تھی۔ وزیراعظم نے استعفیٰ دینے کے بعد اپنے بیان میں بتایا تھا کہ ’صدر پیوٹن حکومتی ڈھانچے میں بڑی تبدیلیاں کرنا چاہتے ہیں جن کے لیے ہمارا مستعفی ہونا ضروری تھا۔‘ مگر ان کے استعفے کے چند دن بعد ہی 16جنوری 2020ءکو صدر پیوٹن نے میخائیل میشوستین کو وزیراعظم مقرر کر دیا۔ واضح رہے کہ صدر پیوٹن کی صدارت کی مدت2024ءمیں ختم ہونے جا رہی ہے اور وہ اس کے بعد بھی اقتدار اپنے ہاتھ میں رکھنے کے لیے حکومتی ڈھانچے میں یہ بڑی تبدیلیاں کر رہے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی