قومی اسمبلی،حکومت نے بچوں سے زیادتی کے مجرموں کو سر عام پھانسی دینے اور سنگسار کرنے کی تجویز دیدی

قومی اسمبلی،حکومت نے بچوں سے زیادتی کے مجرموں کو سر عام پھانسی دینے اور ...
قومی اسمبلی،حکومت نے بچوں سے زیادتی کے مجرموں کو سر عام پھانسی دینے اور سنگسار کرنے کی تجویز دیدی

  



اسلام آباد (ڈیلی  پاکستان آن لائن)قومی اسمبلی میں وزیر مملکت پارلیمانی امور علی محمد خان اورحکومتی رکن عمران خٹک نے بچوں سے زیادتی کے مجرموں کو سر عام پھانسی دینے اور سنگسار کرنے کی تجویز دیتے ہوئے کہا ہے کہ ریاست مدینہ میں ایسے لوگوں کی سزا سنگساری یا سرعام پھانسی ہوتی تھی،جب تک ایسے قاتلوں کو چوک میں نہیں لٹکایا جائے گا واقعات ختم نہیں ہوں گے۔

قومی اسمبلی کے اجلاس میں نکتہ اعتراض پر اظہار خیال کرتے ہوئے تحریک انصاف کے رکن عمران خٹک نے کہا کہ بچوں کے قتل کے واقعات پھیل رہے ہیں، اس میں ملوث لوگوں کو سرعام سنگسار کیا جائے، انسداد دہشت گردی کی عدالت میں ایسے کیس چلائے جائیں، مدینہ کی ریاست میں ایسے لوگوں کی سزا سنگساری ہوتی تھی یا سرعام پھانسی ہوتی تھی، زینب الرٹ بل میں سرعام پھانسی دینے کا قانون نہیں بنایا جائے ایوان مذمت کرے، مذمتی قرارداد ایوان منظور کرے، علی محمد خان نے کہا کہ نوشہرہ میں بچی کے ساتھ زیادتی واقعہ ہوا اور اس کو شہید کیا گیا، قاتل گرفتار کر کے جیل میں ڈالا گیا، قصور میں زینب شہید کے واقعات کے بعد اس طرح کے واقعات تسلسل سے ہو رہے ہیں، وزیراعظم عمران خان اس بات کے حق میں ہیں بچوں کے ساتھ زیادتی کرنے والوں کو سزائے موت دی جائے، انسانی حقوق نے تاریخی زینب الرٹ بل متعارف کرایا، افسوس کی بات ہے کہ بلاول بھٹو نے بطور چیئرمین انسانی حقوق کمیٹی نے سزائے موت کی مخالفت کی، بل پاس ہونے کے بعد وزیراعظم نے دوبارہ کابینہ میں کہا کہ سزائے موت ہونی چاہیے، جب تک ایسے قاتلوں کو چوک میں نہیں لٹکایا جائے گا واقعات ختم نہیں ہوں گے، دیکھنا ہو گا کہ ایسے واقعات کے پیچھے منظم گینگ تو نہیں ہے۔ راجہ ریاض نے کہا کہ صوبہ پنجاب کا بہت سارا علاقہ اور فصلیں ٹڈی دل سے تباہ ہوئی ہیں، کروڑوں کا نقصان ہوا، حکومت نقصان پورا کرے اور تدارک کیلئے اقدامات کریں،موٹرویز پر پیٹرول پمپ سروس ایریاز نہیں رکھے گئے، وزیر مواصلات مسائل کریں۔ مراد سعید نے کہا کہ ہماری حکومت نے ملتان سکھر موٹروے کھولا، موٹرویز پر سروس ایریاز میں سہولتیں فراہم کرنے کیلئے پیپرا رولز پر عمل کرنے کا فیصلہ کیا گیا لیکن اس عمل سے پہلے موٹرویز کھولنے کا فیصلہ کیا گیا۔ سپیکر نے کہا کہ ٹڈی دل کے مسئلہ پر آج والے اجلاس میں بات ہو گی۔(اح+وخ)

مزید : اہم خبریں /قومی