حکومت کا پاک افغان سرحد انگوراڈہ پر مسافروں کیلئے پناہ گاہ بنانے کا فیصلہ

    حکومت کا پاک افغان سرحد انگوراڈہ پر مسافروں کیلئے پناہ گاہ بنانے کا فیصلہ

  

جنوبی وزیرستان (آن لائن)حکومت نے قبائلی ضلع جنوبی وزیرستان کے پاک افغان سرحد انگوراڈہ کے مقام پر سر حد پار مسافروں کیلئے پناہ گاہ بنانے کا فیصلہ، پناہ گاہ میں مسافروں کو مفت رہائش کے علاوہ مفت کھانا پینا بھی فراہم کیا جائے گا ڈائریکٹر سوشل ویلفیئر حفیظ اللہ سیال اور ایڈمن آفیسر افتخار نے پاک افغان سرحد انگور اڈہ کا دورہ کیا افغانستان سے آنے اور جانیوالے مسافروں کیلئے پناہ گاہ کیلئے جگہ کا تعین کیاگیا قبائلی عمائدین نے پاک افغان سرحد انگور اڈہ پر پناہ گاہ بنانے کے حکومتی اقدام کو سہراہا  ذرائع کے مطابق حکومت نے قبائلی ضلع جنوبی وزیرستان میں پاک افغان سرحد انگور اڈہ کے مقام پر پناہ گاہ بنانے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ افغانستان جانے اور آنے والے مسافر اس پناہ گاہ میں مفت قیام کے علاوہ ان کو مفت کھانا پینا بھی فراہم ہوسکیں اس سلسلے میں ڈائریکٹر سوشل ویلفیئر حفیظ اللہ سیال اور ایڈمن آفیسر افتخارحسین نے قبائلی ضلع جنوبی وزیرستان کے پاک افغان سرحد انگور اڈہ کا دورہ کیا اور پناہ گاہ بنانے کیلئے جگہ کا تعین کیا  اس موقع پر احمدزئی وزیر قبائل کے سرکردہ عمائدین بھی موجود تھے۔پاک افغان سرحد انگور اڈہ کے مقام پر پناہ گاہ کیلئے جگہ کے تعین کے موقع پر موجود قبائلی عمائدین سے خطاب کرتے ہوئے ڈائریکٹر سوشل ویلفیئر حفیظ اللہ سیال اورایڈمن آفیسر افتخارحسین نے کہا کہ موجودہ حکومت اور خاصکر منسٹر سوشل ویلفیئر حشام انعام اللہ اور سیکرٹری مرجر ایر منظور احمد کی خصوصی ہدایت پر وہ جنوبی وزیرستان کے پاک افغان سرحد کا دورہ کررہے ہیں انھوں نے کہا کہ اس پناہ گاہ کو آئندہ چند دنوں میں فعال کیا جائے گااور اس میں تمام سہولیات بھی فراہم کی جائیں گے قبائلی عمائدین ملک نور علی خان وزیر،ملک سیف اللہ خان اور دیگر نے کہا کہ حکومت نے پاک افغان سرحد پر پناہ گاہ منظور کرکے افغانستان اور پاکستان دونوں ممالک کے لوگوں کے دل جیت لئے ہیں اس سے قبل سوشل ویلفیئر کے ڈائریکٹر حفیظ اللہ سیال کی ہدایت پر ایڈمن آفیسر افتخار حسین نے قبائلی ضلع جنوبی وزیرستان میں موجود چار،،وومن فیسیلیٹیشن سنٹر ز کا دورہ کیا انھوں نے سٹاف کی کارگردی دیکھنے کے علاوہ ان کے مسائل بھی سنیں بعض مسائل کو انھوں نے اسی وقت حل کئے جبکہ کئی مسائل ایک ہفتہ کے اندر حل کرنے کی یقین دہانی کی۔ 

پناہ گاہ فیصلہ

مزید :

صفحہ اول -