کاشتکارکو اہمیت نہ دینے سے زراعت بدحالی کا شکار،فخرامام

کاشتکارکو اہمیت نہ دینے سے زراعت بدحالی کا شکار،فخرامام

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) وفاقی وزیر فخر امام نے کہا ہے کہ اشیاء خوردونوش کی قیمتوں کو کنٹرول کرنے کیلئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے، کاشتکاروں کو اہمیت نہیں دی گئی جس کی وجہ سے زراعت کا شعبہ بدحالی کا شکار ہے۔ جمعہ کو سپیکر قومی اسد قیصر کی صدارت میں قومی اسمبلی کی خصوصی کمیٹی برائے زرعی مصنوعات کا اجلاس ہوا جس میں کابینہ کی ذیلی کمیٹی کے نمائندوں کے علاوہ کمیٹی اجلاس میں ماہرین زراعت کی خصوصی شرکت کی۔کمیٹی اجلاس میں خصوصی کمیٹی کی ذیلی کمیٹی کی کنوینئر شاندانہ گلزار نے کمیٹی کو بریفگ دی۔شاندانہ گلزار نے کمیٹی کی دو سالہ کارکردگی کی سفارشات کو کمیٹی کے سامنے پیش کیا۔غلام سرور خان نے کہاکہ ستر سالوں میں پہلی بارے کسان اور کاشتکاروں کے مسائل کے حل کے لیے روڈ میپ بنایا گیا ہے، سابق حکومتوں نے زراعت کو اہمیت نہیں دی جس کی وجہ سے زراعت کا زبوں حالی کا شکار ہے۔ زین قریشی نے کہاکہ بیج کے معیار کو بہتر بنانے کے لیے اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔اسد قیصر نے کہاکہ کاٹن کے بیج کے معیار بہتر ہونے سے پیداوار بڑھے گی،فخرامام نے کہاکہ اسد قیصر نے پارلیمانی تاریخ پہلی بار زراعت کی ترقی کے پارلیمانی سطح پر ایک اہم قدم اٹھایا ہے، زراعت کی ترقی کے ساتھ کسانوں کی ترقی ضروری ہے۔ فخر امام نے کہاکہ کاشتکاروں کو اہمیت نہیں دی گئی جس کی وجہ سے زراعت کا شعبہ بدحالی کا شکار ہے۔ 

فخر امام

مزید :

صفحہ اول -