کاشتکار جہاں چاہیں گنا فروخت کریں، لاہور ہائیکورٹ بہاولپور بینچ

  کاشتکار جہاں چاہیں گنا فروخت کریں، لاہور ہائیکورٹ بہاولپور بینچ

  

بہاولپور(بیورو رپورٹ) لاہور ہائی کورٹ بھاولپور بنچ نے ضلعی انتظامیہ بھاولپور کو گنا کے کاشتکاروں کے خلاف ہر قسم کی کاروائی سے روک دیا،کاشتکاروں کو قانونی حق حاصل ہے کہ وہ ملک کے جس کونے میں چاہئیں گنا لے جاکر فروخت کریں۔تفصیل کے مطابق گنے کے کاشتکاروں ملک محمد حنیف ملتانی،نعیم عباسی،رانا مقصود احمد،سمیع اللہ والطاف نے لاہور ہائی کورٹ بھاولپور بنچ میں ضلعی انتظامیہ بھاولپور کے خلاف جسٹس ساجد محمود سیٹھی کی عدالت میں بذریعہ ایڈوکیٹ ملک محمد اسلم نائچ پٹیشن نمبر 710دائر کی اور موقف اختیار کیا کہ ہم اپنا گنا باہر کی شوگر ملز کو فروخت(بقیہ نمبر25صفحہ6پر)

 کرنا چاہتے ہیں خصوصا سندھ کی شوگر ملوں کو کیونکہ وہاں ریٹ زیادہ ہے مگر ضلعی انتظامیہ بھاولپورآئے روز ہمارے خلاف مقدمات درج کر کے ہمارے قانونی حق کو ہم سے چھین رہی ہے اور ہمیں ہماری من مرضی ملز کو گنا فروخت کرنے میں رکاوٹ ڈالے ہوئے ہے،جس پر جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ کاشتکارکو قانونی حق حاصل ہے کہ وہ اپنا گنا ملک کے جس کونے میں چاہئیں فروخت کریں اس میں ضلعی انتظامیہ بھاولپور یا دیگر کسی کو حق حاصل نہیں کہ وہ اس میں رکاوٹ پیدا کریں،جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے مزید فیصلہ کرنے کیلئے پٹیشنرزکو کین کمشنر پنجاب میاں زمان وٹو کے پاس بھیج دیا ہے، اس موقع پر عدالت سے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پٹیشنز ملک محمد حنیف ملتانی اور نعیم عباسی نے کہا کہ آج کاشتکاروں کو فتح حاصل ہوئی ہے،ضلعی انتظامیہ بھاولپور آئے روز ہم کاشتکاروں کے خلاف کریک ڈان اور مقدمات درج کر رہی تھی جس کی وجہ سے مجبورا ہمیں عدالت عالیہ سے رجوع کرنا پڑا۔

فتح قرار

مزید :

کامرس -