چوک سرور شہید:ٹی ایچ کیو ہسپتال  میں نومولود جاں بحق، ورثاء کا احتجاج

    چوک سرور شہید:ٹی ایچ کیو ہسپتال  میں نومولود جاں بحق، ورثاء کا احتجاج

  

 مظفر گڑھ،چوک سرور شہید (سپیشل رپورٹر+ نا مہ نگار) ٹی ایچ کیو ہسپتال چوک سرور شہید میں تعینات لیڈی ڈاکٹر  نے مبینہ طور پر میرے بچے کی جان لے لی۔ہمیں ایک(بقیہ نمبر10صفحہ6پر)

 ہفتہ سے ہسپتال میں زلیل کیا جارہاتھا،  تفصیل کے مطابق ٹی ایچ کیو ہسپتال چوک سرور شہید میں عبدالعزیز نامی شخص نے صحافیوں کو بتایا کہ اس کی بیوی حاملہ تھی اور وہ ایک ہفتے سے مسلسل ٹی ایچ کیو ہسپتال چوک سرور شہید میں لیڈی ڈاکٹر رابعہ بشیر کے پاس چیک اپ کیلئے آرہے تھے اور مبینہ طور پر لیڈی ڈاکٹر رابعہ بشیر زچگی کا ٹائم بڑھا کر نت نئی ادویات لکھ کر دیتی رہی جس سے عبدالعزیز کی حاملہ بیوی کی حالت بگڑ گئی۔طبیعت زیادہ خراب ہونے پر اس کو ٹی ایچ کیو ہسپتال چوک سرور شہید لایا گیا جہاں پر پوری رات مریضہ پر نت نئے تجربات کرکے اگلے دن بارہ بجے آپریشن کیا گیا آپریشن دیر سے کر نے کی وجہ سے بچہ زچگی کے وقت ہی فوت ہوگیا۔بچے کے فوت ہو نے پر بچے کے والد نے اپنے دیگر اہلخانہ کے سمیت لیڈی ڈاکٹر کے خلاف شدید احتجاج کر تے ہو ئے مبینہ طور پر الزام لگایا کہ ٹی ایچ کیو ہسپتال چوک سرور شہید میں تعینات لیڈی ڈاکٹر رابعہ بشیر ڈیوٹی کے اوقات میں اپنے فرائض ایمانداری سے سر انجام نہ دیتی ہے جس کی وجہ سے مسائل پیدا ہو رہے ہیں،مریضوں کے ساتھ ہتک آمیز رویہ اور ناروا سلوک کر نا لیڈی ڈاکٹر اپنا وطیرہ بنا رکھا ہے  متاثرہ عبدالعزیز،عبدالرشید، حاجی احمد بخش، بشیر احمد، آصف، غلام فرید، بلال و دیگر نے سی ای او ہیلتھ مظفرگڑھ اور ڈپٹی کمشنر مظفرگڑھ سے لیڈی ڈاکٹر رابعہ بشیر کے خلاف فوری نوٹس لینے اور کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

احتجاج

مزید :

ملتان صفحہ آخر -