کھیتوں میں شہری کو 400 سال پرانی انتہائی قیمتی چیز مل گئی

کھیتوں میں شہری کو 400 سال پرانی انتہائی قیمتی چیز مل گئی
کھیتوں میں شہری کو 400 سال پرانی انتہائی قیمتی چیز مل گئی
سورس: Pxhere.com

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک)برطانیہ میں دھاتیں تلاش کرنے والے ایک شہری کو کھیتوں سے ایسی تاریخی چیز مل گئی کہ بیٹھے بٹھائے کروڑ پتی بن گیا۔ میل آن لائن کے مطابق 49سالہ کیوین ڈکٹ نامی یہ آدمی ہاربراکے دیہی علاقے میں کھیتوں میں میٹل ڈی ٹیکٹر سے قیمتی دھاتیں تلاش کر رہا تھا کہ اس دوران ایک جگہ ڈی ٹیکٹر نے کسی دھات کی نشاندہی کی۔ جب کیوین نے اس جگہ پر کھدائی کی تو نیچے سے ایک اڑھائی انچ کا ہیرا دریافت ہو گیا۔ 

رپورٹ کے مطابق یہ ہیرا برطانوی بادشاہ ہنری ہشتم کے تاج سے گم ہونے والا ہیرا تھا۔ ہنری ہشتم 1509ءسے 1547ءمیں اپنی موت تک انگلینڈ کے بادشاہ رہے تھے۔ بعد ازاں جب انگلینڈ کے جرنیل اولیور کرومویل نے 1653ءمیں سول جنگ میں بادشاہ چارلس اول کی بادشاہت کا خاتمہ کیا اور انہیں سزائے موت دی، تب اس نے ہنری ہشتم کے تاج کو بھی پگھلا کر اس کے سونے سے سکے تیار کرنے کا حکم دیا تھا۔ یہ ہیرا تاج کو پگھلانے کے دوران لاپتہ ہو گیا تھا۔ 

رپورٹ کے مطابق ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ ہنری ہشتم کے تاج کا سب سے بڑا ہیرا تھا جو تاج میں نمایاں جگہ پر لگاہوا تھا۔ اس ہیرے کی قیمت 20لاکھ پاﺅنڈ (تقریباً 43کروڑ 94لاکھ روپے) سے زائد ہے۔کیوین کا کہنا تھا کہ ’جب میں نے اس ہیرے کو پہلی بار دیکھا تو مجھے لگا کہ یہ کوئی چمکدار دھات ہے۔‘رپورٹ کے مطابق یہ ہیرا برٹش میوزیم میں پہنچا دیا گیا ہے جہاں ماہرین اس ہیرے پرتحقیق کریں گے اور حتمی طور پر بتائیں گے کہ یہ ہیرا بادشاہ ہنری ہشتم کے تاج کا ہے یا نہیں۔ اگر یہ ثابت ہو گیا کہ یہ ان کے تاج کا ہیرا ہے تو کیوین کو ہر حال میں یہ ہیرا برٹش میوزیم کو فروخت کرنا پڑے گا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -