پاکستان میں کرپشن کلچر ختم کرنے کا وقت آنا ہی تھا جو آچکا ،سب سے مشکل کام احتساب عدالتوں کا ہے:جسٹس علی باقر نجفی 

پاکستان میں کرپشن کلچر ختم کرنے کا وقت آنا ہی تھا جو آچکا ،سب سے مشکل کام ...
پاکستان میں کرپشن کلچر ختم کرنے کا وقت آنا ہی تھا جو آچکا ،سب سے مشکل کام احتساب عدالتوں کا ہے:جسٹس علی باقر نجفی 

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس علی باقر نجفی نے کہا ہے کہ  پاکستان میں کرپشن کا کلچر ختم کرنے کا وقت آنا ہی تھا جو آچکا ہے،وائٹ کالر کرائم کو روکنےکےلئےنیب اور احتساب عدالتیں اپنااپنا حصہ ڈال رہی ہیں،احتساب عدالتوں کےذمہ سب سے مشکل کام ہے۔

پنجاب جوڈیشل اکیڈمی کی جانب سے احتساب عدالتوں کے ججز کے لئے ایک روزہ تربیتی ویڈیو لنک ورکشاپ کا اہتمام کیا گیا۔ جسٹس علی باقر نجفی نے ویڈیو لنک کے ذریعےاحتساب عدالتوں کےججز سےاظہار خیال کرتےہوئےکہا کہ احتساب عدالتوں کےججز کےمسائل حل کرنااور انہیں سپورٹ فراہم کرنا ہماری ذمہ داری ہے،خصوصی عدالتوں میں سب سے مشکل کام احتساب عدالتوں کا ہے۔

جسٹس علی باقر نجفی نے کہا کرپشن معاشرے میں گالی کے طور پر متعارف ہے،پاکستان میں کرپشن کا کلچر ختم کرنے کا وقت آنا ہی تھا جو آچکا ہے،احتساب عدالتوں کے ججز کے پاس ایک مشکل ٹاسک ہے کیونکہ ان پر وکلاء، میڈیا اور اعلی عدلیہ کا فوکس ہوتا ہے، نیب کیسز میں فیصلوں میں تاخیر کی کئی وجوہات ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کیسز میں دستاویزات اور گواہوں کی تعداد زیادہ جبکہ ججز کی تعداد کم ہے لیکن اس کے باوجود احتساب عدالتوں کے ججز کی کارکردگی قابل تعریف ہے،خوش آئند بات یہ ہے کہ سپریم کورٹ کی ہدایات پر احتساب عدالتوں کی تعداد بڑھائی جارہی ہے۔

جسٹس علی باقر نجفی نے احتساب عدالتوں کے ججز کے سوالوں کے جواب بھی دئیے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -