ٹاﺅن شپ مین مارکیٹ میں تجاوزات کی بھرمار‘منی بازار بن گئے

ٹاﺅن شپ مین مارکیٹ میں تجاوزات کی بھرمار‘منی بازار بن گئے

  

لاہور (جنرل رپورٹر) 3000 دکانوں پر مشتمل ٹاﺅن شپ مین مارکیٹ اور اس سے ملحقہ مارکیٹیں تجاوزات کے مراکز میں تبدیل ہوگئی ہیں۔ بازاروں کے اندر بازار قائم کرلیے گئے جس سے ٹریفک بند رہنا معمول بن گیا ہے خصوصاً افطاری کے وقت گھنٹوں ٹریفک پھنسی رہتی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ تاجر تنظیموں کے احتجاج کے باوجود اقبال ٹاﺅن کا عملہ تجاوزات ختم نہیں کرسکا۔ جس کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ عملہ تجاوزاتی سے لاکھوں روپے وصول کررہا ہے جس سے تاجروں کا کاروبار ٹھپ ہوچکا ہے۔ ریڑھی بان دکانداروں سے زیادہ کمائی کررہے ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ ٹی ایم اے اقبال ٹاﺅن کی ملی بھگت سے ٹاﺅن شپ مارکیٹ تجاوزات کی آماجگاہ بن گئی ہے۔ جبکہ سروس روڈ اور فٹ پاتھ بھر چکے ہیں۔ انجمن تاجران کے صدر چودھری اللہ دتہ اور نائب صدر یاسر قدیر بٹ نے ”پاکستان“ سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ دکاندار لاکھوں روپے ٹیکس ادا کرتے ہیں مگر سہولت نام کی کوئی چیز نہیں ہے اور عملہ ملا ہوا ہے جس سے کاروبار تباہ ہوچکے ہیں۔ دوسری طرف مین بازار کے صدر نثار کھوکھر کا کہنا ہے کہ تجاوزات کی بنا پر لوٹ کھسوٹ ہورہی ہے۔ ٹاﺅن انتظامیہ اور حکومت کو شرم تک نہیں آتی فٹ پاتھ نہیں بچے ہم کدھر جائیں۔ اس حوالے سے ٹی ایم اقبال ٹاﺅن سلیم خان نے کہا کہ تجاوزات کیخلاف آپریشن روز ہوتا ہے مگر آج سے دوبارہ کریں گے مزید کہہ کر زیادہ حصہ نشتر ٹاﺅن میں ہے جو حصہ اقبال ٹاﺅن میں ہے وہاں تجاوزات نہیں رہنے دیں گے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -