ٹریڈنگ کا رپوریشن آف پاکستان میں اربو ں روپے کے سودوں میں کرپشن کاا نکشاف

ٹریڈنگ کا رپوریشن آف پاکستان میں اربو ں روپے کے سودوں میں کرپشن کاا نکشاف

  

اسلام آباد (آن لائن) ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان (ٹی سی پی )میں اربوںروپے مالیت کے سودوں میں غبن اور کرپشن کا انکشاف۔آڈیٹر جنرل آف پاکستان کی رپورٹ سال 2011-12 کے مطابق ٹی سی پی افسران کی نا اہل اور پیشہ وارانہ امور کی ادائیگی میں کابلی کے باعث ادارے کی جانب سے دیئے گئے مختلف ٹھیکوں میں اصول و ضوابط کو بروکار نہ لائے جانے کے باعث 2 ارب38 کروڑ 86 لاکھ19 ہزار روپے نقصان کا سامنا ہے۔ آڈیٹر جنرل آف پاکستان کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ٹی سی پی کی جانب سے چینی خریداری کے شوگو ملوں کو دیئے گئے ٹینڈر میں معاہدے پر عمل درآمد نہ کئے جانے کے باعث ادارے کو 2ارب 10 کروڑ61 لاکھ 28 ہزار روپے نقصان کا سامنا ہے ۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ معاہدے کے مطابق مقررہ ہدف میں6شوگر ملوں کی جانب سے معینہ مدت میں سپلائی فراہم نہ کئے جانے کے باعث شوگر مل مالکان کو ٹی سی پی کی جانب سے ادا کردہ رقم کے ساتھ ساتھ 25 فیصد مارک اپ بطور جرمانہ ادا کرنے کا پابند بنایا گیا تھا جبکہ تاحال ان شوگر ملز کی جانب سے ٹی سی پی کو مجوزہ2 ارب10 کروڑ روپے سے زائد ادائیگی نہیں کی گئی ہے ۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ٹی سی پی کی جانب سے درآمد کردہ گندم میں چار ایجنٹس کی جانب سے نہ صرف 6 کروڑ18 لاکھ60 ہزار واجب الادا ہیں بلکہ16 کروڑ32 لاکھ74 ہزار روپے مالیت کی 41 لاکھ میٹرک ٹن سے زائد کم گندم کی سپلائی کی گئی ۔آڈٹ رپورٹ 2011-12میں ٹی سی پی میں جاری بے قاعدگیوں کے حوالے سے مزید بتایا گیا ہے کہ ٹی سی پی انتظامیہ کی جانب سے گندم کی نقل و حمل کے حوالے سے ٹرانسپورٹرز کو6 کروڑ36 لاکھ82 ہزار روپے کی غیر قانونی طور پر ادائیگی کی گئی جبکہ قواعد کے مطابق معاہدے میں نقل و حمل کے اخراجات میں سامان کی اپ لوڈنگ اور آف لوڈنگ کے کوئی علیحدہ خرچ نہیں ہوتا جبکہ ٹی سی پی کی جانب سے ٹرانسپورٹرز کو خطیر رقم بطور معاوضہ غیر قانونی طور پر ادا کی گئی ۔آڈٹ رپورٹ کے مطابق ٹی سی پی کو بندر گاہ سے سامان کے تادیر نہ اٹھائے جانے کے باعث 4 کروڑ19 لاکھ71 ہزار روپے بندر گاہ پر کرائے کی مد میں ادا کرنا پڑے جس سے بچا جا سکتا ہے۔ آڈیٹر جنرل رپورٹ کے مطابق ایک اور معاملے میں ٹی سی پی کے گودام میں مقررہ حد سے ایک لاکھ 68 ہزار ایک سو 12 میٹرک ٹن کم چینی پائی گئی جس سے ادارے کو ایک کروڑ 3 لاکھ59 ہزار روپے نقصان کا سامنا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -