الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق کی کلاف ورزی ، پولیس 851مقدمات میں سے 409کی تفتیش مکمل نہ کر سکی

الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق کی کلاف ورزی ، پولیس 851مقدمات میں سے 409کی تفتیش ...

لاہور(خبرنگار )پنجاب پولیس الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پردرج 851مقدمات میں سے 409میں تفتیش مکمل نہ کر سکی ۔تفصیلات کے مطابق الیکشن کے دوران پولیس نے لاہور سمیت پنجاب بھر میں ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پرتحریک انصاف کے خلاف182مقدمات، پاکستان مسلم لیگ ن کے خلاف219، متحدہ مجلس عمل اور دیگر سیاسی جماعتوں کے خلاف285،پیپلز پارٹی کے خلاف 22اور آزاد امیدواروں کے خلاف 115 مقدمات درج کیے گئے اور اس میں پولیس نے کر کے تحریک انصاف کے 143 ، پاکستان مسلم لیگ ن کے 251، متحدہ مجلس عمل اور دیگر سیاسی جماعتوں کے 275، پیپلز پارٹی کے16جبکہ آزاد امیدواروں کے 103 کارکنوں اور ساتھیوں کو گرفتار کیا ۔ اسی طرح مختلف سیاسی جماعتوں اور آزاد امیدواروں کے خلاف اسلحہ کی نمائش پر 187مقدمات ، آتش بازی پر 66، بغیر اجازت کارنر میٹنگ پر58،غیر قانونی ریلی پر 50، دفعہ 144کی خلاف ورزی پر 54، لاؤڈ سپیکر کے غلط استعمال پر119، اقدام قتل پر 7،فورتھ شیڈولزکی خلاف ورزی پر 5، غیر قانونی سائز کے بورڈ لگانے اور دیگر خلاف ورزیوں پر144 مقدمات درج کیے گئے۔جس میں پولیس نے ایک رکن صوبائی اسمبلی ندیم عباس باراافراد کے خلاف الیکشن کے بعد مقدمہ درج کیا ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق ابتک 803ملزمان کو گرفتار کیا گیا ہے جس کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوایا گیا ۔ تاہم درج ہونے والے 851مقدمات میں سے پولیس 409مقدمات میں ابتک تفتیش مکمل نہیں کر سکی ہے ۔ اس حوالے سے ایس پی صدر معاذ ظفر کا کہنا ہے کہ مقدمات کی تفتیش جارہی ہے اور جلد تفتیش مکمل کر کے

مزید : علاقائی