نگران حکومت اور الیکشن کمیشن اپنی ذمہ داری پوری نہیں کر سکے ،نیئربخاری

نگران حکومت اور الیکشن کمیشن اپنی ذمہ داری پوری نہیں کر سکے ،نیئربخاری

اسلام آباد (آن لائن) پیپلزپارٹی کے سیکرٹری جنرل سید نیئر حسین بخاری نے کہا ہے کہ نگران حکومت اور الیکشن کمیشن اپنی آئینی اور قانونی ذمہ داری پوری نہیں کر سکے‘ پاکستان پیپلزپارٹی نے انتخابات کے نتائج کو مکمل طور پر مسترد کردیا ہے ‘ پیپلزپارٹی کو الیکشن میں لیول پلینگ فیلڈ میسر نہیں ہوئی‘ یہ الیکشن کیسے صاف و شفاف ہوسکتے ہیں جس میں گنتی کے دوران پولنگ ایجنٹس کو نکال دیا گیا اور رزلٹ فارم 45 پر نہیں دیا گیا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ان کے ہمراہ پاکستان پیپلزپارٹی کے اچ شریف سے امیدوار مخدوم سید علی حسن گیلانی ‘ نذیر ڈھوکی بھی تھے۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کو سیاسی جماعتوں نے مسترد کیا ہے لیکن پاکستان پیپلزپارٹی نے مکمل طور پر مسترد کردیا ہے۔ پری پولنگ ‘ پولنگ ڈے اور پوسٹ پولنگ ریگنگ ہوئی ہے اور پیپلزپارٹی کو لیول پلینگ فیلڈ میسر نہیں ہوئی۔ چیئرمین پیپلزپارٹی کو اچ شریف میں جلسہ کرنے سے روکا گیا وہ اچ شریف درگاہ میں جانا چاہتے تھے ان کو کئی گھنٹے روکے رکھا گیا۔ فارم 45 پر رزلٹ نہیں دیا گیا بلکہ سادہ کاغذ پر الیکشن کا رزلٹ دیا گیا اور اچ شریف سے ہمارے امیدوار پر 24 جولائی کو ایف آئی آر درج کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن اور نگران حکومت اپنی آئینی اور قانونی ذمہ داری پوری کرنے میں مکمل طور پر ناکام رہے۔ ایسے لگتا ہے جیسے نگران حکومت ساٹھ دنوں کی پکنک پر آئی ہو۔ پاکستان پیپلزپارٹی نے جمہوریت کیلئے اسمبلی میں بیٹھنے کا فیصلہ کیا ہے ہماری پارٹی کی جمہوریت کیلئے بہت قربانیاں ہیں ہم سسٹم کو چالانا چاہتے ہیں۔ نگران حکومت ایک ہی پارٹی کو سپورٹ کرتی رہی انہوں نے سوال کے جواب میں کہا کہ سیاست میں بات چیت ہوتی رہتی ہے۔ پاکستان مسلم لیگ ن سے بات چیت چل رہی ہے لیکن جو بھی فیصلہ ہوگا وہ پارٹی کی قیادت کرے گی۔ پاکستان میں اس وقت تک دہشت گردی ختم نہیں ہوسکتی جب تک پاکستان میں سیاستدان دہشت گردوں سے مل کر اقتدار میں آتے رہیں گے۔ ہمارے نمبرز کم ہیں اس لئے ہم اپوزیشن میں بیٹھیں گے اور جمہوری عمل کو چلائیں گے۔

نیئربخاری

مزید : صفحہ آخر