جعل سازوں نے اے ٹی ایم ڈیٹا چرا کر صارف کی 4لاکھ سے زائد رقم نکال لی

جعل سازوں نے اے ٹی ایم ڈیٹا چرا کر صارف کی 4لاکھ سے زائد رقم نکال لی

لاہور(خصوصی رپورٹ)الیکشن گزرنے کے فوری بعد صوبائی دارلحکومت میں اے ٹی ایم پر ڈیوائس لگا کر اسکمرز نے بینک صارفین کے بینک اکاونٹس کا صفایا کرنے کی مہم ایک دفعہ پھر زور پکڑگئی ، کئی صارفین اپنی جمع پونجی سے ہاتھ دھوبیٹھے ہیں جن میں ڈیلی پاکستان آن لائن کے ایگزیکٹو ایڈیٹر شاہد نذیر چودھری اور انکی اہلیہ بھی شامل ہیں ، لاکھوں روپے داؤپر لگنے کی وجہ سے بینک اکاؤنٹ ہولڈرز میں پریشانی کی دوڑ لگ گئی اور اس مرتبہ الائیڈ بینک کے کسٹمرز نشانے پر آئے جبکہ ماضی میں ایچ بی ایل کے صارفین بھی لٹ چکے ہیں، احتیاطی تدابیر میں صارفین کے پاس اس کے علاوہ کوئی آپشن باقی نہیں کہ وہ الائیڈ بینک کے اکاؤنٹس میں موجود تمام رقم ہی نکلوالیں۔تفصیلات کے مطابق شاہد نذیر چودھری اور ان کی اہلیہ کا اے ٹی ایم سے ڈیٹا چراکر انکے اکاونٹ سے مجموعی طور پر چار لاکھ روپے سے زائد رقم نکلوالی گئی ، اس بارے میں الائیڈ بینک لمیٹڈ کی ہیلپ لائن پر فوری اطلاع کی گئی توہیلپ لائن نے ان کی مدد کرنے سے بھی معذوری ظاہر کردی۔شاہد نذیر چودھری نے بتایا کہ رات گئے انکی بیگم کے اے بی ایل اکاؤنٹ سے بھی اسکمرز نے رقم نکال لی جس پر اے بی ایل کی ہیلپ لائن نے انہیں بتایا کہ اے ٹی ایم پر ڈیوائسز لگا کر اسکمرز صارفین کا ڈیٹا چوری کررہے ہیں۔بینکنگ ذرائع کے مطابق سٹیٹ بینک کی واضح ہدایات کے باوجود بینکوں نے اے ٹی ایم مشینو ں پر اینٹی ڈیوائس سسٹم انسٹال نہیں کئے جس سے روزانہ ایسی وارداتیں رونما ہورہی ہیں اوربینکوں کے صارفین کروڑوں روپے سے محروم کئے جارہے ہیں جبکہ بینک متاثرین کو ازالہ کرنے میں بھی ٹال مٹول سے کام لے رہے ہیں اور کسٹمرز کو خوار کررہے ہیں۔ذرائع نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایاکہ ملک بھر میں اے ٹی ایم اور موبائل و انٹرنیٹ بینکنگ انتہائی خطرناک ہوچکی ہے جبکہ زیادہ تر صارفین کے موبائل فون انکے اکاونٹ کے ساتھ میسجنگ پر اٹیچ نہ ہونے سے ایسی کسی واردات سے مطلع بھی نہیں ہوپاتے کہ ان کے اے ٹی ایم استعمال کرنے کے بعد انکے اکاونٹ سے رقم چرائی جاچکی ہے۔انہوں نے بتایا کہ سکمرز اس مقصد کے لئے پہلے سے ہیک کئے ہوئے اکاونٹس میں رقم ٹرانسفر کرتے اورپھر اے ٹی ایم سے نکلوالیتے ہیں۔

اے ٹی ایم چوری

مزید : صفحہ آخر