مشکوک اکاﺅنٹس کو نہیں چلنے دینگے، چیف جسٹس نے آپریٹ کرنے سے روک دیا

مشکوک اکاﺅنٹس کو نہیں چلنے دینگے، چیف جسٹس نے آپریٹ کرنے سے روک دیا
مشکوک اکاﺅنٹس کو نہیں چلنے دینگے، چیف جسٹس نے آپریٹ کرنے سے روک دیا

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے جعلی بینک اکاﺅنٹس ازخودنوٹس کیس کی سماعت کے دوران مشکوک اکاﺅنٹس کو آپریٹ کرنے سے روک دیا۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے ہیں کہ کوئی کمپنی بند ہوتی ہے تو ہو جائے،مشکوک اکاﺅنٹس کو نہیں چلنے دیں گے ۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بنچ نے جعلی بینک اکاﺅنٹس کیس کی سماعت کی، عدالت نے مشکوک اکاﺅنٹس کو آپریٹ کرنے سے روک دیاہے۔

چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ کوئی کمپنی بند ہوتی ہے تو ہو جائے،مشکوک اکاﺅنٹس کو نہیں چلنے دیں گے ،ایف آئی اے مشکوک اکاﺅنٹس کی تحقیقات کر رہی ہے ،مشکوک اکاﺅنٹس میں غیر معمولی ٹرانزیکشنزہوئی ہیں،عدالت کرپشن کے معاملات کو بہت سنجیدگی سے لے رہی ہے۔

جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ تحقیقات میں کلیئرہونے پر اکاﺅنٹ بحال کر دینگے۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور