آبادی میں تیزی سے اضافہ دراصل بم دھماکا ہے ، آبادی میں اضافے پرازخودنوٹس کی سماعت میں چیف جسٹس کے ریمارکس

آبادی میں تیزی سے اضافہ دراصل بم دھماکا ہے ، آبادی میں اضافے پرازخودنوٹس کی ...
آبادی میں تیزی سے اضافہ دراصل بم دھماکا ہے ، آبادی میں اضافے پرازخودنوٹس کی سماعت میں چیف جسٹس کے ریمارکس

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) آبادی میں اضافے پرازخودنوٹس کی سماعت کرتے ہوئے چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ یہ کیس قوم کے لئے نہایت اہم ہے، آبادی پر قابو پانا ضروری ہے ورنہ مسائل پیدا ہوں گے،آبادی میں تیزی سے اضافہ دراصل بم دھماکا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق آبادی میں اضافے پرازخودنوٹس کی سماعت چیف جسٹس آف پاکستان میاں محمد ثاقب نثار نے سپریم کورٹ لاہور رجسٹر ی میں کی۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ آبادی میں اضافہ پاکستان کیلئے اہم مسئلہ ہے،آبادی پر قابو پانا ضروری ہے ورنہ مسائل پیدا ہوں گے ۔ اٹارنی جنرل نے عدالت میں موقف اپنا یا کہ اٹھارویں ترمیم کے بعد آباد ی کنٹرول کا متعلقہ شعبہ صوبوں کو منتقل ہو چکا ہے۔جس پر چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ آباد ی میں اضافہ سے وسائل کم اور رہنے کی جگہ میں کمی ہو رہی ہے، اس مسئلے کے لئے آگاہی کی ضرورت ہے جس کے لئے ایک قومی پالیسی بنانا ہو گی جس پر اٹارنی جنرل کا کہنا تھا کہ سندھ کے علاوہ دیگرصوبے آبادی کنٹرول کی پالیسی پرتعاون کیلئے تیارہیں۔جس پرچیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ، آبادی پر قابو پانا ضروری ہے نہیں تو مسائل پیدا ہوں گے،آبادی میں تیزی سے اضافہ دراصل بم دھماکا ہے اور عدالت صوبوں کے آپس میں مسائل ختم کرا سکتی ہے ۔جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیئے کہ آبادی میں کنٹرول کے لئے عوام کو سمجھانا ہوگا اور اس کے بدلے میں کچھ دینا بھی ہو گا ،کیونکہ عام تاثر یہ ہے کہ آبادی میں کنڑول اسلامی قوانین کے منافی ہے ۔

مزید : جرم و انصاف /علاقائی /پنجاب /لاہور