بھارتی میڈیا نے عمران خان پر ایسا الزام لگا دیا کہ جان کر پاکستانیوں کو ہنسی آ جائے گی

بھارتی میڈیا نے عمران خان پر ایسا الزام لگا دیا کہ جان کر پاکستانیوں کو ہنسی ...
بھارتی میڈیا نے عمران خان پر ایسا الزام لگا دیا کہ جان کر پاکستانیوں کو ہنسی آ جائے گی

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت کے کئی حلقوں، بالخصوص بالی ووڈکے ستاروں اور کرکٹرز کی طرف سے عمران خان کو انتخابی جیت پر مبارکباد کے پیغامات آ رہے ہیں تاہم بھارتی میڈیا کو ان کی جیت ایک آنکھ نہیں بھائی اور وہ ان پر الزامات کی بوچھاڑ جاری رکھے ہوئے ہے۔ اب بھارتی میڈیا کی طرف سے عمران خان پر ایسا الزام عائد کر دیا گیا ہے کہ سن کر پاکستانیوں کو ہنسی آ جائے گی۔ ایکسپریس ٹربیون کے مطابق بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ ’’عمران خان کٹر اور شدت پسندوں کے اتحادی ہیں۔‘‘ حالانکہ حقیقت یہ ہے کہ عمران خان کی تحریک انصاف نے حافظ سعید کی پارٹی سے کہیں زیادہ ووٹ لیے ہیں۔اس کی ایک مثال حلقہ این اے 53ہے جہاں سے حافظ سعید کے امیدوار نے صرف1ہزار 361ووٹ لیے جبکہ عمران خان نے 92ہزار 891ووٹ حاصل کیے۔

حافظ سعید کو پاکستانیوں کو اکثریت ایثار پسند شخص سمجھتی ہے تاہم سیاسی طور پر وہ زیادہ پاکستانیوں کو متاثر نہیں کر سکے۔ان کی جماعت اللہ اکبر تحریک نے ملک بھر میں مجموعی طور پر صرف1لاکھ 71ہزار 587ووٹ لیے۔اس کے برعکس تحریک انصاف نے ملک بھر میں 1کروڑ 68لاکھ 51ہزار 240ووٹ حاصل کیے۔حافظ سعید کے بیٹے حافظ طلحہ سعید بھی سرگودھا کے حلقہ این اے 91سے الیکشن لڑ رہے تھے جہاں سے انہیں 11ہزار سے کم ووٹ ملے۔ ان کے مقابلے میں مسلم لیگ ن کے فاتح امیدوار نے 1لاکھ 10ہزار 525ووٹ حاصل کیے۔

بھارتی میڈیا کے پراپیگنڈے پر بریگیڈیئر (ر) فاروق حمید کا کہنا ہے کہ ’’عمران خان کی جیت بین الاقوامی اور بھارتی میڈیا کو ہضم نہیں ہو رہی چنانچہ وہ بعض مخصوص وجوہات کی بناء پر عمران خان کی ساکھ کو نقصان پہنچانا چاہتے ہیں۔پاکستان میں یہ پہلی بار ہوا ہے کہ کوئی ایسا شخص وزیراعظم بننے جا رہا ہے جس کا بیرون ملک کوئی اثاثہ نہیں ہے۔ عالمی اسٹیبلشمنٹ بھی تحریک انصاف کی جیت پر انگشت بدنداں ہے۔یہی وجہ ہے کہ وہ عمران خان کے خلاف پراپیگنڈا کر رہے ہیں۔‘‘

مزید : بین الاقوامی