تبدیل شدہ ناموں سے کام کرنے والی کالعدم تنظیموں کو قربانی کی کھالیں اکٹھا کرنے کی اجازت نہیں:محکمہ داخلہ

تبدیل شدہ ناموں سے کام کرنے والی کالعدم تنظیموں کو قربانی کی کھالیں اکٹھا ...
تبدیل شدہ ناموں سے کام کرنے والی کالعدم تنظیموں کو قربانی کی کھالیں اکٹھا کرنے کی اجازت نہیں:محکمہ داخلہ

  

کوئٹہ (ڈیلی پاکستان آن لائن) محکمہ داخلہ وقبائلی امور بلوچستان نےعید الاضحی کی قربانی کے کھالوں اور صدقات اکٹھے کرنے کے حوالے سے ہدایات جاری کر دی ہیں جس کے مطابق کالعدم اور تبدیل شدہ ناموں سے کام کرنے والی جماعتوں / تنظیموں کو قربانی کی کھالیں اور صدقات اکٹھا کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

صوبائی محکمہ داخلہ بلوچستان کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق صوبے میں انسداد دہشت گردی کی دفعات کی رو سے کالعدم تنظیموں کے ہر قسم کے عوامی اجتماعات پر بھی پابندی ہوگی،قربانی کی کھالیں اور صدقات اکٹھا کرنے کی خواہشمند جماعتوں کو متعلقہ اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز سے اجازت لینا ہوگی اور اس بات کا ثبوت دینا ہوگا کہ ان کا کسی کالعدم تنظیم یا جماعت سے تعلق نہیں ہے،ڈپٹی کمشنر اجازت نامے کی درخواست پر پانچ دنوں میں فیصلہ کریں گے،فیصلہ نہ ہونے پر متعلقہ ڈپٹی کمشنر ڈسٹرکٹ انٹیلی جنس کمیٹی سے مشاورت کے بعد درخواست پر فیصلہ کرنے کا مجاز ہو گا تاہم ڈپٹی کمشنر اور ڈی آئی سی سے درخواست پر فیصلہ نہ ہونے پر متعلقہ ڈیژن کے کمشنر دو دنوں میں درخواست پر فیصلہ کریں گے۔

ضلعی ڈپٹی کمشنر اپنے متعلقہ اضلاع میں کھالوں اور صدقات اکھٹا کرنے کے لیے جگہ مختص کریں گے جہاں لوگ رضاکارانہ طور پر کھالیں اور عطیات جمع کرسکیں گے۔ ان مخصوص جگہوں سے صرف وہی جماعتیں یا فلاحی تنظیمیں کھالیں اور صدقات اکھٹا کر سکیں گی جن کے پاس اجازت نامہ موجود ہوگا۔ زبردستی یا جبرا کسی کو کھالیں اور صدقہ دینے پر مجبور نہیں کیا جائے گا ،خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف انسداد دہشت گردی قانون کے تحت کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔ ضلعی انتظامیہ اور پولیس حکام ویڈیو مانیٹرنگ کے ذریعے اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ کوئی کالعدم تنظیم یا جماعت کھالیں اور صدقات اکٹھا نہ کرے صدقات اور کھالیں اکٹھا کرنے کے لیے لاؤڈاسپیکر کے استعمال پرسختی سے پابندی ہوگی اور خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف بلوچستان ساؤنڈ سسٹم ریگولیشنز ایکٹ 2016 کے تحت کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔ تاجر اور کھالوں کی خرید و فروخت کرنے والے فرمز اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ صرف منظور شدہ فلاحی تنظیموں سے کھالیں خریدی جائیں۔

مزید :

علاقائی -بلوچستان -کوئٹہ -