ملک میں مزید 34اموات، 1020نئے کورونا مریض رپورٹ،پنجاب میں لاک ڈاؤ ن تاجروں کا احتجاج جاری

ملک میں مزید 34اموات، 1020نئے کورونا مریض رپورٹ،پنجاب میں لاک ڈاؤ ن تاجروں کا ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)ملک میں کورونا سے مزید 34افراد جاں بحق ہوگئے جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد 5915 ہوگئی جبکہ نئے کیسز سامنے آنے کے بعد مر یضوں کی تعداد 277063 تک جاپہنچی۔اب تک پنجاب میں 2133، سندھ میں 2189 اور خیبر پختونخوا میں 1186 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں جبکہ اسلام آباد میں 165، بلوچستان میں 136، آزاد کشمیر میں 50 اور گلگت بلتستان میں 50 افراد کا انتقال ہوا ہے۔بروز بدھ ملک بھر سے کورونا کے مزید 1020 کیسز اور 34 ہلاکتیں رپورٹ ہوئیں جن میں سندھ سے 654 کیسز اور 17 اموات، پنجاب سے 173 کیسز 8 ہلاکتیں، خیبر پختونخوا سے 121 کیسز اور 6 اموات، اسلام آباد 25 کیسز، گلگت مزید 32 کیسز 2 ہلاکتیں اور آزاد کشمیر سے 15 کیسز اور ایک ہلاکت سامنے آئی۔پنجاب سے کورونا کے 173کیسز اور 8 ہلاکتیں رپورٹ ہوئیں جن کی تصدیق پی ڈی ایم اے کی جانب سے کی گئی ہے۔صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے مطابق پنجاب میں کورونا کے مریضوں کی کْل تعداد 92452 اور ہلاکتیں 2133 ہو چکی ہیں۔صوبے میں اب تک کورونا کے 82215 مریض صحتیاب بھی ہوچکے ہیں۔وفاقی دارالحکومت سے کورونا کے مزید 25 کیسز سامنے آئے، سرکاری پورٹل پر رپورٹ کے مطابق اسلام آباد میں کورونا کے مریضوں کی کل تعداد 14963 اور ہلاکتیں 165 ہوگئی ہیں۔اس کے علاوہ شہر میں کورونا سے صحتیاب ہونیوالوں کی تعداد 12377ہوگئی ہے۔گلگت بلتستان سے کورونا کے مزید 32 کیسز اور 2 ہلاکتیں سامنے آئیں۔سرکاری پورٹل کے مطابق گلگت میں کورونا کے مریضوں کی کل تعداد 2042 اموات کی تعداد 50، صحتیاب ہونیوالوں کی تعداد 1658ہوگئی۔آزاد کشمیر سے کورونا کے مزید 15 کیسز اور ایک ہلاکت سامنے آئی۔آزاد کشمیر میں اب تک مجموعی طور پر 2055 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے جبکہ وہاں اموات کی تعداد 50 ہے۔آزاد کشمیر میں اب تک کورونا سے 1543 افراد صحتیاب ہوچکے ہیں۔بدھ کو سندھ میں کورونا کے باعث مزید 17 افراد جان کی بازی ہار گئے جس کے بعد صوبے میں ہلاکتوں کی تعداد 2189 ہوگئی۔وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے مزید 654 افراد میں مہلک وائرس کی تصدیق ہوئی جس کے بعد صوبے میں متاثرہ مریضوں کی تعداد 120052 تک جاپہنچی۔صوبے میں اب تک 109544 مریض صحتیاب ہوچکے ہیں۔خیبر پختونخوا میں بدھ کو کورونا کے مزید 121 کیسز اور 6 ہلاکتیں سامنے آئیں۔خیبرپختونخوا میں کورونا وائرس کے باعث اب تک مجموعی طور پر 1192 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ صوبے میں متاثرہ افراد کی تعداد 33845 تک جاپہنچی۔کے پی میں اب تک 28317 افراد کورونا وائرس سے صحتیاب بھی ہو چکے ہیں۔ادھرچین میں کورونا وائرس کے مزید 101 کیسز سامنے آ گئے جو کہ گزشتہ ساڑھے تین ماہ کے دوران وہاں ایک دن میں سامنے آنیوالے سب سے زیادہ کیسز ہیں۔میڈیا رپورٹس کے مطابق چین کے نیشنل ہیلتھ کمیشن کا کہنا ہے کہ 101 نئے کیسزمیں 98 سنکیانگ کے علاقے میں سامنے آئے جبکہ تین کیسز کی تصدیق بیرون ملک سے واپس آنیوالے شہریوں میں ہوئی۔ 27 بغیر ایسے مریضوں کی تصدیق بھی کی جن میں کورونا کی کوئی علامت موجود نہیں تھی۔

کورونا اموات

لاہور (لیڈی رپورٹر) صوبائی دارالحکومت لاہورشہر میں لاک ڈاون کے دوسرے روزبھی شاہ عالم مارکیٹ، انارکلی بازار،اچھرہ سمیت متعدد مارکیٹوں کے داخلی راستوں کو قنا تیں، بیریئرز اور خار دار تاریں لگا کر بند رکھا گیا جس پر تا جر برادری سرا پا احتجا ج بن گئی۔تفصیلات کے مطابق شہر میں لاک ڈاون کا پہلا روز خاصا ہنگامہ خیز رہا تو پولیس دوسرے دن مکمل تیار ی کیساتھ مارکیٹوں اور بازاروں میں آئی۔ دن طلوع ہونے سے قبل ہی پولیس نے شاہ عالم مارکیٹ، انارکلی بازار،اچھرہ سمیت متعدد مارکیٹوں کے داخلی راستوں کو قناتیں، بیریئرز اور خار دار تاریں لگا کر بند کردیا،انجمن تاجران کے قائدین نے شاہ چوک میں پریس کانفرنس کی اور پنجاب کو پولیس اسٹیٹ قرار دیتے ہوئے حکومت کی سخت الفاظ میں مذ مت کی۔انجمن تاجران کے مرکزی سیکرٹری جنرل نعیم میر نے کہا موجودہ حکومت تاجر دشمن ہے جب تاجر دوست حکومت آئیگی تو زیادتی اور ظلم کرنیوالے پولیس افسران کو صوبہ بدر کروائیں یا او ایس ڈی بنوائیں گے۔تاجر قائدین نے فیصل آباد،ملتان اور لاہور میں تاجروں کی گرفتاریوں کی سخت الفاظ میں مذمت بھی کی۔انجمن تاجران پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل نعیم میر حکومتی پالیسیوں پربرس پڑے،انہوں نے اپوزیشن رہنماؤں کو حکومت کیخلاف تحریک چلانے کی پیشکش بھی کی،ان کا کہناتھا حکومت سے نجات کیلئے لانگ مار چ بھی کرنا پڑا تو کرینگے،سڑکو ں پر نکلیں گے، حکومت چور نالائق اور نکمی ہے،ہم پر سیاست کا الزام لگا نے والے کاروبار بحال کیوں نہیں کرتے۔ پولیس ایسا رویہ اختیار کیے ہوئے جیسے تاجر بھارت سے آئے ہیں،حکومت کے اسی رویے کے باعث بنگلہ دیش کا ٹکہ پاکستانی روپے پر بھاری پڑگیا۔ عید کے بعد اس حکومت سے نجات کیلئے لانگ مارچ بھی پلان کریں گے،اپوزیشن نے کوئی تحریک چلائی تو اس کا حصہ ہوں گے۔ مختلف مارکیٹوں، بازاروں کے داخلی راستوں کی بندش سے ملحقہ رہائشیوں کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ پو لیس نے کاروبار کھولنے کیلئے آنیوالے تاجروں کو داخلی راستوں پر ہی روک دیا جس کی وجہ سے تاجروں نے حکومت اور پولیس کی خلاف شدید نعرے بازی کی۔ پولیس کی بھاری نفری بھی تعینات رہی۔دوسری طرف جوہر ٹاؤن جی ون مارکیٹ کے تاجروں نے مجاہد مقصود بٹ کی قیادت میں حکومت کیخلاف احتجاجی مظاہرہ بھی کیا۔

لاک ڈاؤن

لاہور(آئی این پی) پنجاب بھر میں عیدالاضحیٰ پر لاک ڈاؤن کے دوران درزیوں، ڈرائی کلینرز، فرٹیلائزر اورایکسچینج کمپنیز کو استثنیٰ حاصل ہوگا۔ سیکرٹری صحت پنجاب محمد عثمان نے نوٹیفکیشن جاری کر دیا جس کے مطابق عید کے موقع پر ایکسچینج کمپنیوں کو استثنیٰ ملنے سے بیرون ملک سے بھیجی جانیوالی رقوم حاصل کرنے میں دشواری نہیں ہوگی۔ فصلوں پر بروقت زر عی ادویات کے استعمال کے پیش نظر فرٹیلائزر کمپنیوں کو کام کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔ نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ لاک ڈاؤن میں کھلے رکھے جانیوالے تمام کاروبار حکومت کی جانب سے جاری کردہ ایس او پیز پر سختی سے عمل پیرا رہیں گے۔ احتیاطی تدابیر کے باعث صوبے میں کوروناکیسز کی شرح میں بتدریج کمی آرہی ہے۔

کاروبار استثنیٰ

مزید :

صفحہ اول -