کراچی میں والدین کے انکار پر 19ہزار بچے پولیو کے قطرے پینے سے محروم

  کراچی میں والدین کے انکار پر 19ہزار بچے پولیو کے قطرے پینے سے محروم

  

کراچی (این این آئی) وزیر صحت سندھ ڈاکٹر عذرا پیچوہو کی زیر صدارت 20جولائی سے ڈسٹرکٹ ویسٹ اور سینٹرل میں چلائی گئی مہم کے سلسلے میں جائزہ اجلاس کا انعقاد کیا گیا، اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیرصحت کا کہنا تھا پولیو کے قطرے پلانے سے انکار کرنیوالے والد ین کو آمادہ کرنا ایک چیلنج رہا ہے،تاہم ہماری کوشش رہے گی کوئی بچہ پولیو کے قطرے پینے سے رہ نہ جائے۔ وزیر صحت کو بریفنگ دی گئی جس میں بتایا رواں ماہ چلنے والی مہم میں 23یوسیز میں پانچ سال تک کی عمر کے ڈھائی لاکھ سے زائد بچوں کو قطرے پلانے کا ٹارگٹ پورا کر نے کی کوشش کی گئی، گزشتہ مہم کے وران والدین کے انکار کرنے کی وجہ سے 38ہزار بچے قطرے پینے سے رہ گئے تھے جس میں اب 20 ہزار بچوں کو ان کے والدین کو آمادہ کرنے پر قطرے پلائے جا چکے ہیں، مگر اب بھی 18ہزار 700بچے قطرے پینے سے رہ گئے ہیں جن کے والدین کو آمادہ کیا جائیگا۔ برسات کی وجہ سے پولیو مہم کا ٹارگٹ پورا کرنے میں مشکلات پیش آئیں۔ وزیر صحت نے کہا تمام مشکلا ت کے باوجود پولیو ورکرز کا قومی خدمت سرانجام دینا قابل تحسین ہے۔ والدین کو ہر صورت میں آمادہ کیا جائیگا، اس ضمن میں تمام وسائل استعما ل کیے جائیں گے۔ آئندہ پولیو مہم اگست میں چلائی جائیگی تمام بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے۔ کورونا صورتحال کے بعد پولیو ورکرز کی حفاطت کی وجہ سے مہم کچھ عرصہ متاثر رہی۔

پولیو قطرے محروم

مزید :

صفحہ آخر -