دنیا اقتصادی خشک سالی کی طرف بڑھ رہی ہے،میاں زاہد حسین

دنیا اقتصادی خشک سالی کی طرف بڑھ رہی ہے،میاں زاہد حسین

  

کراچی (اکنامک رپورٹر)پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فور م وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر، ایف پی سی سی آئی میں بزنس مین پینل کے سینئر وائس چیئرمین اور سابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ کرونا وائرس سے متاثر ہونے والے دنیا کے کئی ممالک میں 35 فیصد تک کاروبارمکمل طور پر دیوالیہ ہوجائیں گے جو ان ممالک کی معیشت اور مالی نظام کے لئے بڑا چیلنج ثابت ہو گا۔پاکستان میں وائرس کی تباہ کاری میں کمی آئی ہے مگر عالمی اقتصادی قوت قرار دئیے جانے والے ممالک میں اسکی تباہ کاریاں جاری ہیں۔ میاں زاہد حسین نے بزنس کمیونٹی سے گفتگو میں کہا کہ ایک عالمی کمپنی نے2021تک ترقی یافتہ ممالک کی جانب سے سرتوڑ کوششوں اور کھربوں ڈالر کے امدادی و مراعاتی پیکیجز کے باوجود امریکہ میں کمپنیوں کے دیوالیہ ہونے میں 57 فیصد، برازیل میں 45 فیصد، برطانیہ میں 43فیصد،ا سپین میں 41فیصد جبکہ چین میں 20 فیصد اضافے کا تخمینہ لگایا گیا جس سے پتہ چلتاہے کہ یہ ممالک بارود کے ڈھیر پر بیٹھے ہیں اور صرف سرمایہ نچھاور کرنے سے کام نہیں چلے گا بلکہ دیگرنئے راستے تلاش کرنا ہونگے۔انھوں نے کہا کہ پاکستان ان خوش قسمت ممالک میں شامل ہے جہاں کرونا وائرس نے وہ نقصان نہیں پہنچایا جس کا اندازہ تھا اور اب اسکے اثرات کم ہو رہے ہیں جس سے سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال ہو رہا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -