حاملہ خواتین کے کورونا وائرس کا شکار ہونے کا خطرہ کئی گنا زیادہ، تازہ تحقیق میں سائنسدانوں نے خبردار کردیا

حاملہ خواتین کے کورونا وائرس کا شکار ہونے کا خطرہ کئی گنا زیادہ، تازہ تحقیق ...
حاملہ خواتین کے کورونا وائرس کا شکار ہونے کا خطرہ کئی گنا زیادہ، تازہ تحقیق میں سائنسدانوں نے خبردار کردیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی سائنسدانوں نے کورونا وائرس کے متعلق نئی تحقیق میں حاملہ خواتین کے بارے میں انتہائی تشویشناک خبر سنا دی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں نے اپنی اس تحقیق میں بتایا ہے کہ حاملہ خواتین کو کورونا وائرس لاحق ہونے کا خطرہ دیگر خواتین کی نسبت 4گنا زیادہ ہوتا ہے چنانچہ انہیں دوسری عورتوں کی نسبت کورونا وائرس سے بچاﺅ کی احتیاطی تدابیر پر زیادہ عمل کرنے کی ضرورت ہے۔

اس تحقیق میں سائنسدانوں نے فلاڈلفیا اور پنسلوانیا کی 1300سے زائد خواتین کے اینٹی باڈیز ٹیسٹ کیے، جنہوں نے رواں سال اپریل سے جون کے دوران بچے کو جنم دیا تھا۔ ان میں سے حیران کن طور پر 6.2فیصد کے جسم میں کورونا وائرس کی اینٹی باڈیز موجود تھیں، جس کا مطلب تھا کہ وہ کورونا وائرس میں مبتلا رہ چکی ہیں۔ ان ریاستوں میں دیگر عمومی آبادی میں کورونا وائرس لاحق ہونے کی شرح صرف 1.4فیصد ہے، جو کہ حاملہ خواتین میں 4گنا سے بھی زیادہ پائی گئی۔

پیرلمین سکول آف میڈیسن، یونیورسٹی پنسلوانیا کے سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ ”حاملہ خواتین میں سے بھی سیاہ فام اور لاطینی نسل کی حامل خواتین کو وائرس لاحق ہونے کی شرح سب سے زیادہ پائی گئی۔ ان میں بالترتیب یہ شرح 9.7فیصد اور 10.4فیصد تھی جو عمومی آبادی کی نسبت 9سے 10گنا زیادہ ہے۔ سفید فام حاملہ خواتین میں یہ شرح 2فیصد اور ایشیائی نسل کی خواتین میں سب سے کم 0.9فیصد کو کورونا وائرس لاحق ہوا۔ “

مزید :

تعلیم و صحت -کورونا وائرس -