ٹریفک حادثات میں اضافہ 

ٹریفک حادثات میں اضافہ 

  

 پنجاب کے مختلف شہروں کی سڑکوں پر ہونے والے حادثات میں چودہ افراد جاں بحق اور دو درجن سے زیادہ زخمی ہوئے۔ زیادہ تر حادثات غفلت اور لاپروائی یا تیز رفتاری کا نتیجہ ہیں۔ جاں بحق اور زخمی ہونے والوں میں مرد، خواتین اور بچے بھی شامل ہیں، ایک حادثہ میں دادا دو پوتوں سمیت اللہ کو پیارے ہوئے۔ گوجرانوالہ میں ویگن اور ٹرک میں تصادم ہوا اور پانچ افراد زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے، جبکہ رنگ روڈ لاہور پر ایک پچیس سالہ نوجوان کار کی رفتار پر کنٹرول نہ کر سکا اور اپنے سے آگے جانے والی مزدا ویگن سے جا ٹکرایا، یہ اتفاق نہیں، حقیقت ہے کہ ٹریفک حادثات میں بہت اضافہ ہو گیا ہے۔ ہائی ویز پر بڑے تصادم ہوتے اور زیادہ نقصان ہوتا ہے، جیسے حال ہی میں ڈیرہ غازی خان کے علاقے میں بس کے حادثے میں 30افراد جاں بحق ہوگئے تھے، شہروں میں حادثات معمول بن گئے ہیں، زیادہ تر موٹرسائیکل والوں کے حادثات ہوتے ہیں، اکثر لوگ زخمی اور پھر سڑکوں پر جھگڑے ہوتے ہیں۔ ٹریفک ماہرین کے مطابق 95فیصد حادثات کا باعث ٹریفک قواعد کی خلاف ورزی اور تیز رفتاری  ہے۔ اوورلوڈنگ اور تکنیکی نقائص بھی سبب بنتے ہیں۔ شہروں میں کاروں اور موٹرسائیکل والے نوجوان لائسنس کے بغیر ڈرائیونگ کرتے ہیں، موٹرسائیکل اور موٹرسائیکل رکشا نابالغ بچے چلاتے ہیں، سڑکوں اور چوراہوں پر ٹریفک کے کسی اصول کو مدنظر نہیں رکھا جاتا، ٹریفک وارڈنز اور ٹریفک پولیس (معہ ہائی ویز) بھی خلاف ورزیوں کو نظر انداز کرتی ہے۔ ضرورت ہے کہ ٹریفک قواعد پر انتہائی سختی سے عمل کرایا جائے۔ اس سے جرائم میں بھی کمی ہوگی۔ اگر ایسا نہ ہوا تو جانی اتلاف بڑھا رہے گا۔

مزید :

رائے -اداریہ -