محکمہ صحت سندھ، افسران کے کورونا ویکسین کی فروخت میں ملوث ہونیکا انکشاف 

محکمہ صحت سندھ، افسران کے کورونا ویکسین کی فروخت میں ملوث ہونیکا انکشاف 

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) محکمہ صحت سندھ افسران کے کورونا ویکسین کی فروخت میں ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے، تحقیقات کی روشنی میں پولیس نے محکمہ صحت کے افسران کی گرفتاری کے لیے اجازت طلب کرلی، پولیس کا کہنا محکمہ صحت کے مزید افسران کی گرفتاری عمل میں آسکتی ہے۔کراچی میں کورونا ویکسین کی فروخت کے حوالے سے گرفتار ملزمان سے پولیس کی تحقیقات جاری ہیں، ویکسین کی فروخت میں ملوث دیگر گرفتار 3 ملزمان کے انکشافات سامنے آ گئے۔ پولیس تفتیش کے مطابق گرفتار ملزم ذیشان ڈی ایچ او ہیلتھ آفس میں کنٹریکٹ پر میل نرس بھرتی ہوا، ہیلتھ ڈپارٹمنٹ کے افسر صمد سمیت دیگر نے ویکسین فروخت کرنے کا کہا دفتر کے ساتھی سلطان کی مدد سے ہیلتھ کیئر سروس کیساتھ گھر گھر جاکر فائزر ویکسین لگانا شروع کی۔ملزم نے انکشاف کیا ہے کہ سائنو فارم، سائنو ویک، فائزر ویکسین 7500 سے 15ہزارروپے میں بیچی، ویکسین لگوانے والوں کی انٹری بیرون ملک جانے والوں کی فہرست میں شامل کی جاتی تھی۔ملزمان کے مطابق ویکسین فروخت کرنے کے بعد پیسے ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کے افسران کو دیتے تھے، پولیس کا کہنا ہے ملزمان کے انکشافات کی روشنی میں محکمہ صحت کے مزید افسران کی گرفتاری عمل میں آسکتی ہے۔

محکمہ صحت سندھ

مزید :

صفحہ آخر -