ہیپاٹائٹس سے بچنے کے لئے فوری تشخیص ضروری ہے: پروفیسر خالد مسعود گوندل 

    ہیپاٹائٹس سے بچنے کے لئے فوری تشخیص ضروری ہے: پروفیسر خالد مسعود گوندل 

  

 لاہور(سٹی رپورٹر)کنگ ایڈورڈ میڈیکل  یونیورسٹی کے شعبہ میڈیسن کے زیر اہتمام ورلڈ ہیپاٹائٹس ڈے کی مناسبت سے سیمینار اور واک کا انعقاد کیا گیا جس کے مہمان  خصوصی وائس چانسلر پروفیسر خالد مسعود گوندل تھے۔سیمینار میں چیئرپرسن شعبہ میڈیسن پروفیسر بلقیس شبیر، پروفیسر سائرہ افضل، میو ہاسپٹل  ڈائریکٹر پروفیسر رانا دل آویز ندیم،ڈاکٹر فرح تبسم کیمکولین، ڈاکٹر بلال عزیز، ڈاکٹر ناصر فاورق بٹ، ڈاکٹر میمونہ اور دیگر موجود تھے۔اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر خالد مسعود گوندل کا شرکا سے خطاب میں کہنا تھا کہ کورونا ایک نئی بیماری تھی اور پوری دنیا میں دیکھتے ہی دیکھتے پھیل گئی اسی طرح ایک بیماری ہیپاٹائٹس بھی ہے جس سے سالانہ اموات موجودہ کرونا کی وبا سے زیادہ ہیں ہیپاٹائیٹس قابل علاج  مرض ہے اس مرض میں مبتلا اکثر  لوگوں کو معلوم نہیں ہوتا کہ وہ بیمار ہیں اس بیماری سے متعلق بروقت ٹیسٹ کروانا بہت ضروری ہے۔چیئرپرسن شعبہ میڈیسن پروفیسر بلقیس شبیر کا کہنا تھا کہ  عالمی رپورٹ کے مطابق پاکستان ہیپاٹائٹس کے مریضوں کا شکار پوری دنیا میں دوسرا بڑا ملک ہے،محکمہ صحت کے مطابق ہر سال 4لاکھ کے قریب افراد ہیپاٹائٹس کا شکار ہوتے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان میں  سالانہ ڈیڑھ لاکھ سے زائد افراد ہیپاٹائٹس کی وجہ سے جان سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں،میو ہسپتال ڈائریکٹر پروفیسر رانا دل آویز ندیم نے کہا کہ  ہیپاٹائٹس سی وائرس سب سے زیادہ خطرناک ہے آپریشن سے پہلے تمام مریضوں کے ہیپاٹائٹس ٹیسٹ کروانا ضروری ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -