تحقیقاتی اداروں نے ملزم کے موبائل فون کا ڈیٹا، کال ریکارڈ نگز حاصل کر لیں 

        تحقیقاتی اداروں نے ملزم کے موبائل فون کا ڈیٹا، کال ریکارڈ نگز حاصل ...

  

 اسلام آباد(آئی این پی) نورمقدم قتل کیس میں   تحقیقاتی اداروں نے ملزم  ظاہر جعفر کے موبائل فون کا ڈیٹا اور کال ریکارڈنگز حاصل کرلیں،ملزم ظاہر جعفر  نے قتل کے فورا بعد اپنے والد کو 7بجکر29 منٹ پر46 سیکنڈ دورانیے کی پہلی کال کی،والد سے بات کرنے کے بعد ملزم نے اپنے والد کے دوست کو 7 بجکر30 منٹ پر کال کی،ملزم کی والد کے دوست کو کی جانیوالی کال 5 منٹ اور 46 سیکنڈ جاری رہی۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد کے سیکٹر ایف سیون میں قتل ہوانیوالی  خاتون نورمقدم قتل کیس میں  تحقیقاتی اداروں نے اہم پیش رفت کی ہے۔ تحقیقاتی اداروں نے ملزم  ظاہر جعفر کے موبائل فون کا ڈیٹا اور کال ریکارڈنگز حاصل کرلی ہیں۔ ملزم ظاہر جعفر  کی  کال ہسٹری کے مطابق   ظاہر جعفر نے مقتولہ نورمقدم کوقتل کرنے کے بعداپنے والد،دوستوں سمیت متعدد افراد سے رابطے کیے۔تحقیقات کے مطابق ملزم وقوعہ کے بعد فون کال پر ایک شخص کو کہا  گھر پر ڈاکو آگئے اور دوسرے کو فون پر کہا  میری زندگی خطرے میں ہے۔  ملزم ظاہر جعفر  نے قتل کے فورا بعد اپنے والد کو 7بجکر29 منٹ پر46 سیکنڈ دورانیے کی پہلی کال کی،والد سے بات کرنے کے بعد ملزم نے اپنے والد کے دوست کو 7 بجکر30 منٹ پر کال کی،ملزم کی والد کے دوست کو کی جانیوالی کال 5 منٹ اور 46 سیکنڈ جاری رہی۔تحقیقات میں مزید یہ سامنے آیا کہ ملزم ظاہر جعفر  ملزم کے والد کا اپنے دوست سے مکالمہ کیاکہ ظاہرنے کچھ گڑبڑکردی ہے،آپ براہ مہربانی  گھرپہنچ جائیں جبکہ ملزم اس دوران اپنے دوستوں کو بھی کالیں کرکے حیلے بہانوں سے گھر بلاتا رہا،ملزم کسی دوست کوڈاکووں کے آنیکا اور کسی کومجھ پرحملہ کردیاگیا کا بہانہ کرتا رہا، ملزم نے آخری کال اپنی خاتون دوست کو کی اور اسے بھی  گھر آنے کو کہا۔تفتش کے  مطابق ملزم نے   اپنے دوست سے مکالمہ کیا کہ  والدہ اورڈاکٹرمجھے تھیراپی ورس میں داخل کراناچاہتے ہیں، مزید یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ  ملزم جعفر کے والد نے ملزم کی کال ریسیو کرنے کے بعد تھیراپی ورس کے ڈاکٹرطاہر کوفون کیا،ذاکرجعفر نے ڈاکٹرطاہرسے کہا کہ جلدی جائیں ظاہر گھر پر کسی لڑکی کو سولیسائٹ کررہاہے۔ڈاکٹر طاہر نے ذاکرجعفر سے پوچھا کہ آپ کیاکہنا چاہ رہے ہیں،کیامطلب ہے سولیسائٹ کررہاہے،ڈاکٹر طاہر آپ سمجھدار آدمی ہیں،آپ سمجھ گئے ہیں کہ میں کیا کہ رہاہوں آپ چلے جائیں،والد کا ڈاکٹرسے مکالمہ ۔ملزم نورمقدم کو قتل کرنے کے بعد سچویشن کو کنٹرول کرنے کیلیے لوگوں کو بلاتا رہا،پولیس کے مطابق ملزم مکمل ہوش وحواس میں تھااورچالاکی سیکوشش کررہاتھاکہ صورتحال سے نکلاجائے۔

موبائل ڈیٹا

مزید :

صفحہ اول -