اونچی ذات کی لڑکی سے شادی کرنے پر نوجوان قتل 

اونچی ذات کی لڑکی سے شادی کرنے پر نوجوان قتل 
اونچی ذات کی لڑکی سے شادی کرنے پر نوجوان قتل 

  

ممبئی ( ڈیلی پاکستان آن لائن ) بھارت میں برہمن لڑکی سے شادی کرنے والے دلت نوجوان انیش کو قتل کر دیا گیا ، مقتول کے والدین نے قتل کا الزام انیش کے سسرال والوں پر عائد کیا ہے ۔

بی بی سی کے مطابق دلت نوجوان انیش نے برہمن لڑکی دیپتی مشرا سے شادی کی تھی ، لڑکی کے اہلخانہ روز اول سے ہی اس شادی سے خوش نہیں تھے اور 24 جولائی کو نقاب پوش حملہ آوروں نے تیز دھار آلے سے نوجوان کو قتل کر دیا ۔

انیش اور دیپتی دونوں گورکھپور کی یونیورسٹی سے تعلیم یافتہ تھے ، دونوں کے مضامین الگ تھے مگر ملاقات یونیورسٹی میں ہی ہوئی تھی ۔ دپتی کے اہلخانہ رشتے کیلئے راضی نہ تھے جس پر دونوں نے کورٹ میرج کرلی ، دپتی کے والد نے انیش پر مقدمہ درج کر ادیا جس میں ریپ سمیت دیگر دفعات شامل کی گئیں ، بعد ازاں لڑکی کی ضد پر مقدمہ واپس لے کر 28مئی کو شادی کرا دی گئی جس کے بعد انیش نے بھی تمام احتیاطی تدابیر اختیار کرنا چھوڑ دیں ۔

24جولائی کو انیش اپنے چچا کے ساتھ کسی کام کیلئے گھر سے باہر ہارڈ ویئر شاپ میں گیا کہ چہرے پر نقاب پہنے چار افراد نے ان پر نوکیلے ہتھیاروں سے حملہ کر دیا جس میں انیش ہلاک ہو گیا جبکہ اس کے چچا بری طرح زخمی ہو گئے ۔

پولیس نے 17افراد کے خلاف مقدمہ درج کر کے چار افراد کو حراست میں لے لیا ہے ۔

پولیس کے مطابق یہ واردات کرایے کے غنڈوں سے نہیں کرائی گئی بلکہ جان پہچان کے لوگوں نے خود کی ہے ، معاملے میں اب تک شادی کی رنجش کے علاوہ کوئی دوسرا پہلو سامنے نہیں آیا۔

دوسری جانب مقتول کی بیوی دپتی مشرا نے اپنے پورے خاندان کیلئے سزائے موت کا مطالبہ کر دیا ہے ۔

مزید :

بین الاقوامی -جرم و انصاف -