حکومت بجلی کی فراہمی میں مکمل ناکام ہوچکی ہے،محمد عامر فاروقی

حکومت بجلی کی فراہمی میں مکمل ناکام ہوچکی ہے،محمد عامر فاروقی

  

سکھر (ڈسٹرکٹ رپورٹر)کراچی سندھ اتحاد سکھر ڈویژن کے صدر,نشتر روڈ، انجمن تاجران اینڈ جنرل مرچنٹ مارچ بازار اور ایوان صنعت وتجارت سکھر کے سابق نائب صدر محمد عامر فاروقی نے کہا ہے کہ بجلی کے بلوں میں جبری ٹیکس کے نام پر تاجروں کی جیبوں پر ڈاکہ ڈالنے کے مترادف قرار دیتے ہوئے کہا کہ حکومت کے مظالم تاجروں کے خلاف بڑھتے جارہے ہیں اب ہم خاموش نہیں رہیں گے پورے ملک کی تاجر برادری سراپااحتجاج اور مظاہرے کررہی ہے۔ پورے ملک کی تاجربرادری ایک پلیٹ فارم پر ہے۔ ان خیالات کا اظہار عامر فاروقی نے متعددتاجر تنظیمات کے وفد سے ملاقات کے دوران گفتگو  کرتے ہوئے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت بجلی کی فراہمی میں مکمل ناکام ہوچکی ہے 12 سے 18 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کے باوجود بجلی کے بلوں میں ٹیکسوں کی شرح بڑھاکر تاجروں اور عوام کو کیا پیغام دیا جارہا ہے۔  دوسری جانب انرجی کرائسس کے نام پر تاجروں کو رات 9بجے کاروبار بند کرنے کی پابندی بھی لگائی ہوئی ہے۔ پاکستان کی عوام کو پاکستان سے محبت اور حب الوطنی کی سزا دی جارہی ہے حکومت نے بجلی کے بلوں پر فکس ٹیکس عائد کرکے ایک غیر مقبول فیصلہ کیا اور غلط روایت ڈالنے کی کوشش کی تاجر پہلے ہی بجلی کے بلوں میں جی ایس ٹی اور دیگر ٹیکسسز ادا کرتے آرہے ہیں اب فکس ٹیکس عائد کرکے کاروباری طبقے کو مشتعل کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب تک ہم نے حکومت سے مطالبات کیے اور کوشش کی کہ احتجاج کا راستہ اختیار نہ کیا جائے حکومت نے ہمیں احتجاج کرنے پر مجبور کردیا ہے اب تاجر برادری خاموش نہیں بیٹھے گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -