چارسدہ کے مختلف دریاؤں میں اونچے درجے کا سیلاب 

چارسدہ کے مختلف دریاؤں میں اونچے درجے کا سیلاب 

  

       چارسدہ(بیورورپورٹ) حالیہ مون سون بارشوں سے چارسدہ کے مختلف دریاؤں میں اونچے درجے کا سیلاب۔ سینکڑوں ایکڑ فصلوں میں پانی کھڑاہونے سے نقصان پہنچا۔ ضلعی انتظامیہ کا دریا کنارے مکینوں کو محتاطررہنے اورسول ڈیفنس اور ریسکیو سمیت تمام ادروں کو الرٹ رہنے کی ہدایت۔ ڈپٹی کمشنر کے دفتر میں فلیڈ کنٹرول روم قائم۔تفصیلات کے مطابق حالیہ مون سون بارشوں سے چارسدہ کے بیشتر علاقے متاثر ہوئے ہیں جبکہ چارسدہ سے گزرنے والے دریاؤں میں اونچے درجے کا سیلاب ریکارڈ ہوا ہے۔ اس حوالے سے ایکس سی این ایرگیشن حافظ محمد یاسر خان کے مطابق چارسدہ کے دریائے جیندی میں جمعہ کے روز اونچے درجے کا سیلابی ریلا گزر رہا ہے جہاں پانی کا بہاؤں 25ہزار کیوسک ہے۔ اسی طرح چارسدہ میں دریائے سوات میں خیالی کے مقام پر درمیانی درجے کا سیلابی ریلا گزرا جہاں پانی کا بہاؤں کی شرخ 18ہزار کیوسک رہا جبکہ دریائے کابل میں سردریاب کے مقام پر پانی کے بہاؤں کی شرخ 40ہزار کیوسک تک ریکارڈ کیا گیا ہے۔ ایکسین ایری گیشن کے مطابق دریاؤں کے کنارے حفاظتی پشت کے باعث سیلابی ریلے سے کوئی جانی نقصان نہیں ہو ا ہے البتہ شام کے وقت دریاؤں میں پانی کی سطح میں کمی دیکھنے میں آئی۔ دوسری جانب علاقہ اتمانزئی اور شبقدر کے مختلف علاقوں میں حالیہ بارشوں سے ندی نالو ں پانی سے بھیپر گئے جس سے پانی گھروں میں داخل ہوچکا ہے۔ دوسری جانب نکاس آب کے ناقص نظام کے باعث سینکڑوں ایکڑ فصلیں بارش کی وجہ سے متاثر ہوئی ہیں جہاں نقصان کا تحمینہ لگانے کے لئے ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں۔دوسری جانب سیلابی صورتحال کے پیش نظر ڈپٹی کمشنر عبدالرحمان کی ہدایت پر دریا کنارے رہنے والے مکینوں کو الرٹ جاری کیا جا چکا ہے کہ وہ بارش کے دوران مختاط رہے اور کسی بھی ہنگامی صورتحال کے پیش نظر ڈپٹی کمشنر کے دفتر میں قائم فلیڈ کنٹرول روم سے فوری پر رابطہ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ دوسری جانب ضلعی نے ریسکیو، سول ڈیفنس، ایری گیشن اور دیگر تمام متعلقہ محکموں کو الرٹ رہنے اور کسی بھی سیلابی صورتحال میں متاثرین کو فوری ریلیف فراہم کرنے ہدایت کی گئی 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -