چناب:سیلاب کا خدشہ،لوگوں کو فوری نقل مکانی کا حکم

چناب:سیلاب کا خدشہ،لوگوں کو فوری نقل مکانی کا حکم

  

 ملتان (سپیشل رپورٹر) ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ممکنہ سیلاب کے پیش نظر حفاظتی اقدامات کا آغاز کردیا گیا ہے اس سلسلے میں گزشتہ روز ضلعی افسران اور ریسکیو ٹیموں (بقیہ نمبر2صفحہ6پر)

 نے کشتیوں میں دریائی علاقوں میں پیٹرولنگ کی۔اسسٹنٹ کمشنر سٹی خواجہ عمیر محمود اور اسسٹنٹ کمشنر صدر عامر افتخار نے سیلابی صورتحال کا جائزہ لیا اس موقع پر اسسٹنٹ کمشنرز نے حفاظتی بندوں کی انسپکشن اور کچی تعمیرات کی بھی انسپکشن کی۔فلڈ ریلیف کیمپ کے موقع پر ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر ریسیکو ڈاکٹر کلیم اللہ نے بریفننگ دی۔ضلعی ٹیموں نے دریائی علاقوں میں مکینوں کو نقل مکانی کی بھی ہدایت کی۔ڈپٹی کمشنر طاہر وٹو نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ریسکیو فلڈ ریلیف کیمپ قائم کردیے گئے ہیں جبکہ دریائے چناب میں پانی کی صورتحال کی کڑی مانیٹرنگ کررہے ہیں طاہر وٹو نے بتایا کہ فی الحال اونچے درجے کے سیلاب کا کوئی خطرہ نہیں ہے کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے ضلعی انتظامیہ مکمل تیار ہے۔ ممکنہ سیلاب کے خدشہ کے پیش نظر ڈپٹی کمشنر محمدطاہر وٹو نے ضلعی انتظامیہ کے تمام افسران اور متعلقہ اداروں کو الرٹ رہنے کا حکم دے دیا ہے۔ڈپٹی کمشنر کی ہدایت پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو امیرحسن نے  ڈسٹرکٹ ایمرجنسی ریسپانس سنٹر کا وزٹ کیا اور ممکنہ سیلاب سے نمٹنے کے لئے تیاریوں کا جائزہ لیا۔ اس موقع پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو امیر حسن نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ضلعی انتظامیہ کی دریائے چناب میں پانی کی صورتحال پر مکمل نظر ہے اور محکمہ انہار سے پانی کے اتار چڑھاؤ بارے لمحہ بہ لمحہ رپورٹ حاصل کی جارہی ہیں۔انہوں نے بتایا ہفتہ شام تک ہیڈ تریموں کے مقام پر ڈیڑھ لاکھ کیوسک پانی کا ریلہ پہنچے گا۔اس طرح ضلع ملتان کی حدود میں دریائے چناب میں نچلے درجے کے سیلاب کا خدشہ موجود ہے۔ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو نے بتایا کہ ضلع ملتان میں کسی بھی ایمرجنسی سے نمٹنے کے لئے انتظامات مکمل ہیں جبکہ ریسکیو 1122 کی ٹیمیں نشیبی علاقوں میں عوام کو محفوظ مقامات پر منتقل ہونے کے لئے آگاہی دینے میں مصروف ہیں۔انہوں نے بتایا قاسم بیلہ اور بلی چوک میں ریلیف کیمپ قائم کئے جارہے ہیں جبکہ محکمہ لائیوسٹاک کی طرف سے مویشیوں کی ویکسی نیشن مکمل کرلی گئی ہے۔اس موقع پر ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر ریسکیو1122 ڈاکٹر کلیم اللہ نے  ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر کو ریسکیو آپریشن اور پی ڈی ایم اے کے ڈسٹرکٹ کوآرڈنیٹر ناصر سلطان نے ریلیف  انتظامات کے حوالے سے بریفنگ دی۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو امیرحسن نے  ایمرجنسی سنٹر سے ویڈیو لنک کے ذریعے پی ڈی ایم اے کی زوم میٹنگ میں بھی شرکت کی۔ ملک کے بالائی علاقوں سمیت ملک بھر میں مون سون کی موسلا دھار بارشوں کا سلسلہ جاری ہے جس کے باعث ملک کے چار بڑے دریاؤں سندھ، چناب،راوی اور ستلج میں طغیانی پائی جاتی ہے۔اس ضمن میں بھارتی علاقوں میں ہونے والی موسلادھار بارشوں کے باعث دریائے چناب میں مرالہ ہیڈ ورکس پر پانی کی سطح بتدریج بلند ہورہی تھی جس میں اب کمی آنا شرو ہوگئی ہے مذکورہ صورتحال کے نتیجہ میں دریائے چناب میں اونچے درجے کا سیلاب  کا خطرہ ٹل گیا ہے محکمہ آبپاشی کے جاری کردہ اعداوشمار کے مطابق گزشتہ روز دریائے چناب میں مرالہ کے مقام پر پانی کی آمد112054 کیوسک  ریکارڈ کی گئی ہے جو بدستور کم ہورہی ہے اسی طرح دریائے چناب  میں خانکی کے مقام پر پانی کی آمد 105989کیوسک قادر آباد کے مقام پر144616کیوسک،چنیوٹ کے مقام پر147710کیوسک جبکہ تریموں کے مقام پر پانی کی آمد94259کیوسک ریکارڈ کی گئی ہے مذکورہ اعدادوشمار کے مطابق قادر آباد اور چنیوٹ کے مقام پر انتہائی نچلے درجہ کا سیلاب ہے جبکہ دیگر ہیڈ ورکس پر طغیانی کی صورت حال پائی جاتی ہے۔ محکمہ آبپاشی کے ذرائع کے مطابق دریائے چناب میں اونچے درجے کے سیلاب کا خطرہ ٹل گیاہے تاہم انتہائی نچلے درجے کے سیلابی ریلے دریائی بیٹ کے مکینوں اور فصلوں کو متاثر کریں گے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -