خانیوال:غیر قانونی تیل ایجنسیوں،ایل پی جی سلنڈز کیخلاف آپریشن شروع دکانداروں کی دوڑیں، بچاؤ کی کوششیں 

خانیوال:غیر قانونی تیل ایجنسیوں،ایل پی جی سلنڈز کیخلاف آپریشن شروع ...

  

بارہ میل (نامہ نگار) ضلع خانیوال سمیت تحصیل کبیروالا میں سول ڈیفنس ملازمین کی غفلت و لاپرواہی اور بھتہ خوری کی وجہ سے جگہ جگہ منی پٹرول پمپ،غیر قانونی تیل ایجنسیاں،ایل پی جی گیس سلنڈر والی دکانیں،ڈبہ اسٹیشن قائم ہوچکے ہیں،ان تمام غیر قانونی کام کرنے(بقیہ نمبر28صفحہ6پر)

 والوں سے سول ڈیفنس کے ملازمین ماہانہ لاکھوں روپے کی منتھلی وصول کرتے ہیں،سب سے زیادہ غیر قانونی کام کبیروالا اور دیہی علاقوں میں ہورہا ہے،متعدد بار غیر قانونی تیل ایجنسیوں میں آگ بھی لگی چکی ہے اور بندے بھی مر چکے ہیں لیکن سول ڈیفنس کے ملازمین اپنی پیٹ کی آگ بجھانے کے لئے بھتہ خوری میں مصروف ہیں اس سلسلے میں سول ڈیفنس کے ملازمین کے کالے کرتوت نیوز پیپروں میں شائع ہونے پر چیف سیکریٹری پنجاب نے نوٹس لے لیا اور ڈی خانیوال شاہد فرید کو حکم جاری کیا کہ ضلع خانیوال میں غیر قانونی کام کرنے والوں کے خلاف فوری کارروائی عمل میں لائی جائے ان کے غیر قانونی کاروبار سیل کیے جائیں اور ان پر مقدمات درج کیے جائیں جس پر ڈی سی خانیوال شاہد فرید نے گذشتہ روز اسسٹنٹ کمشنرز اور سول ڈیفنس کے ملازمین کو ہدایات جاری کیں ہیں کہ فوری طور پر غیر قانونی کام کرنے والوں کے خلاف کارروائیاں شروع کی جائیں،کبیروالا موضع گدارہ بستی نائیاں والی میں قمر عباس دیہڑ نے غیر قانونی منی پٹرول پمپ لگا رکھا ہے جہاں سے سول ڈیفنس کے ملازمین بھتہ لیتے ہیں،اہلیان کبیروالا عنصر عباس،علی ایاز،مہر رمضان،مہر اقبال،طالب حسین،بابر علی و دیگر نے میڈیا کو بتایا کہ سول ڈیفنس کے ملازمین نے دیہی علاقوں میں غیر قانونی منی پٹرول پمپ،تیل ایجنسیاں و دیگر غیر قانونی کاروباری اڈے قائم کیے ہوئے ہیں جن کے پیمانے بھی کم ہوتے ہیں اور وہ ایرانی پٹرول و ڈیزل دھڑلے سے فروخت کررہے ہیں ان کے خلاف فوری کارروائی کی جائے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -